خاتون کی بدتمیزی پر پوپ فرانسس برہم، ہاتھ زور سے جھٹک دیا

خاتون کی بدتمیزی پر پوپ فرانسس برہم، ہاتھ زور سے جھٹک دیا

  



روم (این این آئی)مذہبی پیشوا اور بزرگان دین عام لوگوں کی نظر میں ہمیشہ ایک ممتاز مقام رکھتے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ جب کبھی بھی عوام کو ان سے ملنے کا موقع میسر آتا ہے تو وہ والہانہ اپنی عقیدت کا اظہار کرتے ہیں۔اسی عقیدت کے اظہار میں چند عقیدت مند جارحانہ انداز اختیار کرتے ہیں اور جس کا نتیجہ بدمزگی کی صورت میں نکلتا ہے۔اس طرح کا ایک ناخوشگوار واقعہ اٹلی میں نئے سال کے آغاز کے موقع پر پیش آیا جب ایک عقیدت مندخاتون نے عیسائیوں کے مذہبی پیشوا پوپ فرانسس سے اظہار تکریم کے لیے جارحانہ انداز اپنایا جو پوپ کو شدید ناگوار گزرا۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق نئے سال کے آغاز کے موقع پر عیسائیوں کے مقدس شہر ویٹیکن سٹی کے سینٹ پیٹرز اسکوائر میں زائرین اور عقیدت مندوں کو مبارکباد دیتے ہوئے مصافحہ بھی کر رہے تھے۔اس موقع پر پوپ فرانسس بچوں سے ہاتھ ملا کر دور جانے لگے تو ایک خاتون نے ان کا ہاتھ مضبوطی سے تھام لیا اور اپنی طرف کھینچنے کی کوشش کی۔پوپ فرانسس کو خاتون کی یہ حرکت شدید ناگوار گزری اور انہوں نے خاتون سے گرفت سے اپنا ہاتھ چھڑانے کے لیے ان کے ہاتھ پر ایک تھپڑ رسید کردیا اور برہمی کا بھی اظہار کیا۔اس واقعے سے قبل خاتون نے صلیب کا نشان بنایا تھا اور 83سالہ پوپ کا ہاتھ پکڑ کر ان سے کچھ کہنے کی کوشش کی لیکن یہ واضح نہیں ہو سکا کہ وہ کیا کہنا چاہ رہی تھیں۔

پوپ

مزید : صفحہ اول


loading...