آرمی ایکٹ ترمیم کا مسودہ تیار،آرمی چیف کی تعیناتی، دوبارہ تعیناتی اور توسیع کوعدالت میں چیلنج نہیں کیا جاسکے گا

آرمی ایکٹ ترمیم کا مسودہ تیار،آرمی چیف کی تعیناتی، دوبارہ تعیناتی اور ...
آرمی ایکٹ ترمیم کا مسودہ تیار،آرمی چیف کی تعیناتی، دوبارہ تعیناتی اور توسیع کوعدالت میں چیلنج نہیں کیا جاسکے گا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)حکومت نے آرمی ایکٹ ترمیم کا مسودہ تیار کرلیا،حکومت نے آرٹیکل 243 میں ترمیم کے ساتھ آرمی ایکٹ 1952میں نیاباب شامل کردیا،تعیناتی دوبارہ تعیناتی اور توسیع کوعدالت میں چیلنج نہیں کیا جاسکے گا۔

نجی ٹی وی 92 نیوز کے مطابق وفاقی حکومت نے آرمی ایکٹ ترمیم کا مسودہ تیار کرلیا،حکومت نے آرٹیکل 243 میں ترمیم کے ساتھ آرمی ایکٹ 1952میں نیا باب شامل کردیا،مسودہ کے مطابق نئے آرمی چیف کی تعیناتی وزیراعظم کی سفارش پر صدر مملکت کریں گے،وزیراعظم کی سفارش پر آرمی چیف کو 3سال کی توسیع دی جا سکے گی ،وزیراعظم زیادہ سے زیادہ3 سال اور اس سے کم مدت کی سفارش بھی کر سکتے ہیں ۔

مسودہ کے مطابق آرمی چیف کی تعیناتی، دوبارہ تعیناتی اور توسیع کوعدالت میں چیلنج نہیں کیا جاسکے گا،آرمی چیف پر جنرل کی مقررہ کردہ ریٹائرمنٹ کی عمر کا اطلاق نہیں ہوگا،چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کی مدت تعیناتی 3 سال ہوگی،آرمی کے سینئرجنرل کو بھی چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی بنایا جا سکتا ہے ۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...