بنگلہ دیش نے بھی بھارت سے ملحقہ سرحدی علاقوں میں انٹرنیٹ سروس بند کردی

بنگلہ دیش نے بھی بھارت سے ملحقہ سرحدی علاقوں میں انٹرنیٹ سروس بند کردی
بنگلہ دیش نے بھی بھارت سے ملحقہ سرحدی علاقوں میں انٹرنیٹ سروس بند کردی

  



ڈھاکا (ویب ڈیسک)بنگلا دیش نے سیکیورٹی وجوہات کی بنا پر بھارت کے ساتھ اپنے سرحدی علاقوں میں موبائل انٹرنیٹ سروس بند کردی ہے۔بتایا جاتا ہے کہ بنگلا دیش کے ٹیلی کمیونی کیشن ریگولیٹری کمیشن نے سیکیورٹی وجوہات پر موبائل انٹرنیٹ سروس بند کی ہے۔بنگلا دیش اور بھارت کی سرحد 4 ہزار کلومیٹر تک پھیلی ہوئی ہے۔حکام کے مطابق سرحدی علاقوں میں رہنے والے صارفین موبائل انٹرنیٹ، کالنگ اور دیگر سروسز استعمال نہیں کر سکیں گے۔خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ بھارت میں متنازع شہریت قانون کے باعث مسلمانوں کی بنگلا دیش کی جانب نقل مکانی ہوسکتی ہے۔متنازع شہریت کے قانون کے خلاف بھارت بھر میں مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے، جس کے دوران 20 سے زائد افراد جان سے جاچکے ہیں۔

واضح رہے کہ متنازع شہریت بل 9 دسمبر 2019 کو بھارتی پارلیمنٹ کے ایوان زیریں (لوک سبھا) اور 11 دسمبر کو ایوان بالا (راجیہ سبھا) نے منظورکیا تھا، جس کے بعد بھارتی صدر رام ناتھ کووند کے دستخط کے بعد یہ باقاعدہ قانون کا حصہ بن گیا ہے۔متنازع بل کے تحت پاکستان، بنگلا دیش اور افغانستان سے بھارت جانے والے غیر مسلموں کو تو بھارتی شہریت دی جائے گی لیکن مسلمانوں کو نہیں۔

مزید : بین الاقوامی