مقبوضہ کشمیر : حریت رہنماﺅں کی طرف سے غلام محمد خان سوپوری کے گھر کو سربمہر کرنے کی مذمت

مقبوضہ کشمیر : حریت رہنماﺅں کی طرف سے غلام محمد خان سوپوری کے گھر کو سربمہر ...

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں حریت رہنماﺅں سید علی گیلانی ، شبیر احمد شاہ ، نعیم احمد خان ،ظفر اکبر بٹ،یاسمین راجہ اور دیگر نے قابض انتظامیہ کی طرف سے حریت رہنماءغلام محمدخان سوپوری کے گھر کو سر بمہر کرنے اور ان کے اہل خانہ کو جبری طورپر گھر سے بے دخل کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے ریاستی دہشت گردی اور سیاسی انتقام کی بدترین مثال قراردیا ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بزرگ کشمیری حریت رہنماءسید علی گیلانی نے سرینگر میں اپنے فورم کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے جبکہ حریت رہنماﺅں شبیر احمد شاہ ، نعیم احمد خان ،ظفر اکبر بٹ،یاسمین راجہ ،محمد یوسف نقاش ، محمد اقبال میر،شبیر احمد ڈار اور ظہور احمد شیخ نے ایک مشترکہ بیان میں پولیس کے ذریعے غلام محمد خان سوپوری کے اہل خانہ کو گھر سے جبری طورپر بے دخل اور گھر کو سربمہر کرنے کی شدید مذمت کی ۔انھوںنے کہاکہ بھارت اسرائیل کی طرز پر تحریک آزادی سے وابستہ رہنماﺅں کو ا±ن کےگھروں سے بے دخل کرنے کی سازش پر عمل کر رہا ہے ۔ادھر غلام محمدخان سوپوری نے اپنے گھر کو سر بمہر اور اہل خانہ کو جبری طورپر گھر سے بے دخل کرنے خلاف کے تین بیٹوں ، ایک بیٹی اور اہلیہ کے ہمراہ پریس کالونی سرینگر میں احتجاج دھرنا دیا ۔ سوپوری نے اس موقع پر صحافیوں کو بتایا کہ نوگام پولیس اسٹیشن کے اہلکار محکمہ مال اور ضلعی انتظامیہ کے حکام کے ہمراہ ان کے گھر آئے اور انہیں مکان خالی کرنے کیلئے کہا اور بتایا کہ انہیں اعلیٰ انتظامیہ کی طرف سے مکان سربمہر کرنے کے احکامات ملے ہیں ۔انھوںنے بتایا کہ انہیں ان کے گھر سے خالی ہاتھ نکال دیا گیا اور اب ان کے پاس سرچھپانے کیلئے کوئی ٹھکانہ نہیں ہے ۔ حریت رہنماءنے کہاکہ انہیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے کیونکہ ان کا واحد جرم یہ ہے کہ وہ گزشتہ 50برس سے تحریک آزادی سے وابستہ ہیں۔

مزید : عالمی منظر


loading...