جنگ سے واپس جانیوالے امریکی فوجیوں میں خودکشی کا رجحان بڑھ گیا

جنگ سے واپس جانیوالے امریکی فوجیوں میں خودکشی کا رجحان بڑھ گیا

 واشنگٹن(جی این آئی )عراق، افغان جنگ سے واپس جانے والے امریکی فوجیوں میں خودکشی کا رجحان بڑھ گیا۔ جنگ کی ہولناکیوں سے ذہنی دباﺅ، صدمے کے نتیجے میں دماغی زخموں، منشیات کی لت اور مالی دشواری کے باعث ہر روز ایک فوجی اپنی جان لے رہا ہے۔ بہت سے امریکی فوجیوں کے لئے جو عراق اور افغانستان کی جنگوں میں خدمات انجام دے چکے ہیں، گھروں کو واپسی اس وقت کے مقابلے میں کہیں زیادہ مشکل ہوتی ہے جو انہوں نے جنگ میں صرف کیا ہوتا ہے۔ ان سابق فوجیوں میں خودکشی کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے۔ عام آبادی کے مقابلے میں ان لوگوں میں خودکشی کرنے والوں کی تعداد زیادہ ہے۔ جوش لیپسٹین کی موت کا سبب عراق کی جنگ اور اس میں استعمال ہونے والے بم نہیں تھے۔ اس کی موت گھر واپسی کی وجہ سے ہوئی، 23 سالہ فوجی نے، عراق میں اپنی دوسری تعیناتی سے واپسی پر گزشتہ سال خودکشی کر لی? اس کے والد ڈان لیپسٹین نے بتایا کہ ان کے بیٹے کو منشیات کی لت پڑ گئی تھی بدنامی کے ڈر سے اپنی جان لے لیبہت سے فوجی مدد طلب نہیں کرتے کیونکہ انہیں ڈر ہوتا ہے کہ ایسا کرنے سے کہیں ان کا کیریئر خراب نہ ہو جائے،ملٹری نے برسوں پہلے خودکشی سے بچا کی تربیت کا پروگرام شروع کیا تھا،لیکن یہ پروگرام بھی خودکشی کرنے والوں کی ذمہ داری اٹھانے میں ناکام رہا ہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...