مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوجیوں نے جون میں 6 کشمیریوںکو شہید کیا

مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوجیوں نے جون میں 6 کشمیریوںکو شہید کیا

سرینگر(اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے اپنی ریاستی دہشت گردی کی جاری کارروائیوں کے دوران گزشتہ ماہ جون میں 6 کشمیریوں کو شہید کیا۔ ان میں سے ایک کو حراست کے دوران شہید کیا گیا۔کشمیر میڈیا سروس کے ریسرچ سیکشن کی طرف سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کی طرف سے پر امن مظاہرین پر طاقت کے وحشیانہ استعمال سے 200افرادشدید زخمی ہوئے۔ اس عرصہ کے دوران 60 شہریوں جن میں سے بیشتر نوجوان تھے، کو گرفتار کیا گیا۔ جون میں بھارتی فوجیوںنے 3 خواتین کی بے حرمتی کی جبکہ ایک مکان کو تباہ بھی کیا ۔ ادھر قابض انتظامیہ نے کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کو اسلام آبادکے علاقے ڈیلگام میں ایک بین الاقوامی علماءکانفرنس سے خطاب کرنے سے روکنے کیلئے سرینگر میں گھر میں نظربند رکھا۔ بزرگ کشمیری حریت رہنماءسید علی گیلانی کو بھی ان کی رہائش گاہ پر نظربند رکھا گیا۔ انہیں خانیار جانا تھا جہاں 25 جون کو درگاہ دستگیر صاحب جل کر خاکستر ہو گئی تھی۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنماءآغا سید حسن الموسوی نے بڈگام میں اپنی پارٹی کے کارکنوں کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کشمیری عوام اپنے ناقابل تنسیخ حق، حق خودارادیت کے حصول کیلئے پر امن جدوجہد جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوںنے کشمیریوں پر زور دیا کہ وہ تحریک دشمن عناصر کی سازشوں سے خبرداررہیں جو انہیں فرقہ وارانہ بنیادوں پر تقسیم کرنا چاہتے ہیں۔ حریت رہنماﺅں سیّد علی گیلانی، شبیر احمد شاہ، نعیم احمد خان، یاسمین راجہ، ظفر اکبر بٹ، جاوید احمد میر اور محمد یوسف نقاش نے اپنے الگ الگ بیانات میں سرینگر میں بھارتی پولیس کی طرف سے آزادی پسند رہنماءغلام محمد خان سوپوری کو ان کی رہائش گاہ سے جبری طورپر بے دخل کرنے کی شدید مذمت کی ہے۔انہوںنے اس کارروائی کو سیاسی انتقام کی بدترین مثال قرار دیا۔

مزید : عالمی منظر


loading...