مقبوضہ کشمیر:کرفیو ہٹادیا گیا ،معمولات زندگی بحال

مقبوضہ کشمیر:کرفیو ہٹادیا گیا ،معمولات زندگی بحال

سرینگر (اے پی اے ) مقبوضہ کشمیر میں غیر معینہ مدت تک کےلئے نافذ کیے گئے کرفیو کو ہٹادیا گیا جس کے باعث معمولات زندگی بحال ہو گئے جبکہ تحریک حریت کے مختلف رہنماﺅں نے خانیار کے علاقے میں واقع شیخ عبد القادر جیلانی کے مزار کا دورہ کیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق کرفیو ہٹائے جانے کے بعد شہریوں کو بڑے پیمانے پر ریلیف ملا ہے سڑکوں پر تعینات فوج اور پولیس کی بھاری نفری ہٹا لی گئی اور شہریوں کو آزادی کے ساتھ نقل و حمل کی اجازت مل چکی ہے۔ دکانیں،تجارتی مراکز، تعلیمی ادارے ،حکومت دفاتر اور بینکوں نے اپنا معمول کا کام شروع کر دیا اور اتوار کے روز پبلک اورپرائیویٹ ٹرانسپورٹ سڑکوں پر آ گئی۔حریت رہنماﺅں میر واعظ عمر فاروق، یاسین ملک نے شیخ عبد القادر جیلانی کے مزار کا دورہ کیا۔انہوں نے مزار کے گدی نشین سید خالد گیلانی سے ملاقات کی اور 200 سال قدیم مزار کی بحالی کے حوالے سے کیے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا۔حریت کانفرنس کے چیئر مین میر واعظ عمر فاروق نے کہاہے کہ کشمیری اپنے بنیادی حق حق خودارادیت کے لیے لڑ رہے ہیں اور وہ اپنی جدوجہد کو منطقی انجام تک پہنچا کر دم لیں گے۔میر واعظ عمر فاروق نے ایک خانیار میں ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے دستگیر صاحب کے مزار کو نذر آتش کیے جانے واقعہ کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ان کا کہنا تھا کہ کشمیری اپنے بنیادی حق حق خودارادیت کے لیے لڑ رہے ہیں اور وہ اپنی جدوجہد کو منطقی انجام تک پہنچا کر دم لیں گے۔ انہوںنے کہاکہ افسوس ناک سانحات کے ذریعے تحریک دشمن سازشی عناصر کشمیریوں کو فرقہ وارانہ تصادم اور فسادات میں الجھانا چاہتے ہیں ۔ انھوںنے کشمیریوں پر زوردیا کہ وہ تحریک دشمن عناصر کی سازشوں کو ناکام بنانے کیلئے آپسی اتحاد اور یکجہتی کو برقراررکھیں اور تحریک آزادی کشمیر کو سبوتاژ ہونے سے بچائیں۔ حریت کانفرنس کے بزرگ رہنما سید علی گیلانی نے مقبوضہ کشمیر میں فرقہ واریت کو ہوا دینے والے عناصر کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپنے مذموم ہتھکنڈوں سے باز آ جائیں ¾تحریک آزادی کے خلاف کام کرنے والے عناصر اپنے مقاصد میں کامیاب نہیں ہو سکتے اوران کا تحریک آزادی کو سبوتاژ کرنے کا منصوبہ پایہ تکمیل پر پہنچنے نہیں دیا جائے گا۔

مزید : عالمی منظر


loading...