کرپشن کیخلاف کارروائی نہ ہونا قابل مذمت ہے، وسیم اختر

کرپشن کیخلاف کارروائی نہ ہونا قابل مذمت ہے، وسیم اختر

لاہور(جنرل رپورٹر) امیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختر نے کہا ہے کہ چیئرمین نیب کا بیان ”روزانہ 6 سے 8 ارب روپے کی کرپشن ہو رہی ہے“۔ پیپلز پارٹی اور اس کے اتحادیوں کی کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے بدعنوانی کے انکشافات کے باوجود چیئرمین نیب کا کرپٹ عناصر کیخلاف کارروائی نہ کرنا قابل مذمت ہے۔ صرف چار برس میں ملکی قرضے 6700 ارب سے 12000 ارب تک پہنچ گئے ہیں۔ معاشی ترقی کی شرح 7 فیصد سے کم ہو کر ڈھائی فیصد پر آچکی ہے۔ 2008ءمیں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 4 گھنٹے تھا جو بڑھ کر اب 12 گھنٹے ہو چکا ہے۔ 18 فروری سے پہلے کئے گئے تمام وعدے محض ریت کی دیوار ثابت ہوئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز لاہور شہر میں مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ڈاکٹر سید وسیم اختر نے کہا کہ ملکی آبادی کا چالیس فیصد سے زیادہ حصہ غربت سے نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہے۔گیلانی کے دور حکومت میں پاکستان کو کرپشن ، ٹیکس چوری اور خراب طرز حکمرانی کی وجہ سے 8.5 ٹریلین روپے کا نقصان ہوا۔ ایوان صدر سے لے کر نیچے تک کرپشن کا بازار گرم ہے۔ عوام کو حقیقی معنوں میں ریلیف فراہم کرنے کیلئے ضروری ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کے نرخ 55 روپے فی لیٹر تک لائے جائیں۔ لوڈشیڈنگ سے ہر سال 2ارب ڈالر کا نقصان ہو رہا ہے۔ 4 لاکھ مزدور بے روز گار اور 20 ہزار سے زائد صنعتیں بند ہو چکی ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...