ریلوے انتظامیہ کا لوکل ٹرینوں کی سروس بحال کرنے سے انکار

ریلوے انتظامیہ کا لوکل ٹرینوں کی سروس بحال کرنے سے انکار

لاہور(سٹاف رپورٹر)بجلی کی بدترین لوڈشیڈنگ کے خلاف پر تشدد مظاہرے ختم ہونے کے باوجود ریلوے انتظامیہ نے لوکل ٹرینوں کی سروس بحال کرنے سے انکار کردیا ہے جس کے باعث مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے اور متاثرہ مسافر ریزرویشن آفس اور ریلوے اسٹیشن پر سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق ریلوے انتظامیہ نے 18جون کو بجلی کی بد ترین لوڈ شیڈنگ کے خلاف پرتشدد مظاہرہ کے دوران ٹرین کی بوگیاں نزر آتش کرنے کے بعد تمام لوکل ٹرینوں کی سروس بند کردی تھی اور کہا گیا تھا کہ جب تک حالات ساز گار نہیں ہو جاتے یا پنجاب حکومت کی طرف سے سیکیورٹی فراہم نہیں کی جاتی اس وقت تک ٹرینوں کی سروس بحال نہیں ہوگی۔جبکہ دوسری جانب حقیقت یہ ہے کہ حالات بہتر اور پر تشدد مظاہرے بند ہونے کے باوجود ٹرینوں کی آمدو رفت بحال نہیں کی جارہی ہے جس کے باعث لاہور سے نارووال، سیالکوٹ فیصل آباد، ملتان سمیت دیگر چھوٹے شہروں کو چلنے والی لوکل ٹرینوں کے مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ مسافروں نے ٹرینیں بند ہونے کے اقدام کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ ریلوے انتظامیہ نے پراﺅیٹ ٹرانسپورٹ کمپنیوں کو نوازنے کے لئے لوکل ٹرینیں بند کی ہیں تاکہ پنجاب کی عوام خوار ہو، مسافروں نے یہ فیصلہ سیاسی قرار دیا ہے۔گزشتہ روز لاہور ریلوے اسٹیشن پر دیکھا گیا کہ نارووال جانے والے مسافروں کی بڑی تعداد ٹکٹ خریدنے کے غرض سے لاہور ریلوے اسٹیشن پر کھڑی تھی تاہم انہیں بتایا گیا کہ نارووال جانے والی ٹرین کی سروس تا حال بحال نہیں کی جس پر انہوں نے ریلوے انتظامیہ کو برا بھلا اور نااہل کہا اور انکے خلاف احتجاج کیا۔ مسافروں نے مطالبہ کیا کہ ریلوے حکام نے نااہلی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 20ٹرنیں بند کی ہیں۔ انہیں فی الفور بحال کیا جائے۔ واضع رہے کہ جنرل منیجر آپریشنر جنید قریشی کا کہنا ہے کہ جب تک حالات درست نہیں ہونگے ٹرینیں بحال نہیں کی جائیں گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...