غالب مارکیٹ کی حدود میں جرائم زیادہ، اندراج مقدمہ کی شرح انتہائی کم

غالب مارکیٹ کی حدود میں جرائم زیادہ، اندراج مقدمہ کی شرح انتہائی کم

لاہور (خبر نگار) تھانہ غالب مارکیٹ کی حدود میں گزشتہ سال کی نسبت رواں سال میں ڈکیتی، راہزنی اور اقدام قتل سمیت دیگرجرائم کی شرح میں اضافہ ہوا ہے۔ جس میں پولیس نے گزشتہ 6 ماہ کے دوران ڈکیتی اور راہزنی کی 50 وارداتوں میں سے شارع عام پر ہونے والی 35 وارداتوں میں سے 27 وارداتوں کے مقدمات درج کئے ہیں۔ جبکہ تھانے کی حدود میں دکانوں اور گھروں پر 18 وارداتیں ریکارڈ کی گئی اور پولیس نے ہاﺅس راہزنی کے 5 جبکہ شاپ راہزنی کے بھی 5 مقدمات رجسٹرڈ کئے ہیں جن میں سے پولیس نہ تو ڈکیتی کے کسی مقدمہ کا سراغ لگا سکی ہے اور نہ ہی دکانوں اور گھروں میں ہونے والی وارداتوں کا پولیس سراغ لگا سکی ہے۔ اسی طرح ڈکیتی کی خطرناک وارداتوں کے تین واقعات میں سے پولیس نے ڈکیتی کی 393 دفعہ کے تحت ایک مقدمہ جبکہ 394 کی دفعہ کے تحت بھی ایک مقدمہ رجسٹرڈ کیا ہے۔ اسی طرح پرس چھیننے کی 26 وارداتوں میں سے پولیس نے گزشتہ 6 ماہ کے دوران 18 وارداتوں کے مقدمات رجسٹرڈ کئے ہیں اور تاحال پولیس کسی ایک واردات کا پولیس سراغ نہیں لگا سکی ہے۔ اسی طرح تھانے کی حدود میں 50 سے زائد گاڑیاں چوری کی گئیں جبکہ پولیس نے صرف 38 مقدمات درج کئے ہیں اور گھروں میں چوری کی 60 سے زائد وارداتیں ہوئی ہیں، جس میں سے پولیس نے چوری کی دفعہ 380 کے تحت 23 اورچوری کی دفعہ 381 کے تحت 33 مقدمات درج کئے ہیں اور تاحال پولیس کسی ایک مقدمہ کے ملزم گرفتار نہیں کرسکی ہے اس حوالے سے انوسٹی گیشن پولیس کے انچارج عمران خان نے بتایا ہے ڈاکوﺅں کے 10 سے زائد گروہوں کو گرفتار کیا ہے جبکہ 200 سے زائد اشتہاری ملزمان کو گرفتار کیا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...