چیف الیکشن کمشنرکی تعیناتی کے معاملے پرآئینی پیچیدگی پیداہوگئی،حاجی محمد عدیل

چیف الیکشن کمشنرکی تعیناتی کے معاملے پرآئینی پیچیدگی پیداہوگئی،حاجی محمد ...

اسلام آباد (ثناءنیوز )عوامی نیشنل پارٹی کے قائمقام صدرسینیٹرحاجی محمد عدیل نے کہاہے کہ چیف الیکشن کمشنرکی تعیناتی کے معاملے پرآئینی پیچیدگی پیداہوگئی ہے۔ جسے پارلیمنٹ ہی حل کرے گی ورنہ وزیراعظم اوروزرائے اعلی کی نامزدگی کے اختیارات بھی الیکشن کمشنرزکودینے پڑیں گے۔ اتوار کو ایک انٹرویو میں انہوں نے چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے معاملے پر 72 رکنی پارلیمانی کمیٹی جس میں حکومت اپوزیشن کی مساوی نمائندگی میں ڈیڈ لاک کی صورتحال پیدا ہو گئی ہے۔ کوئی فریق پیچھے ہٹنے کے لیے تیار نہیں ہے جبکہ چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کے لیے اتفاق رائے نہ ہونے پر نامزدگی کی دو تہائی اکثریت سے منظوری ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب کمیٹی میں حکومت اپوزیشن کے درمیان تناﺅ کی صورتحال ہو تو ظاہر کمیٹی کے قواعد و ضوابط میں تبدیلی پارلیمنٹ سے رجوع کرنا پڑے گا۔سینیٹر حاجی عدیل خان نے مزید کہا کہ حکومت اپوزیشن کے کسی نام پر اتفاق رائے نہیں ہوتا تو کسی اور شخصیت کے نام کو سامنے لایا جا سکتا ہے۔ کم از کم اس معاملے پر کشیدگی کو ختم ہونا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک میں عبوری چیف الیکشن کمشنر ہے۔پارلیمانی کمیٹی میں ڈیڈ لاک کی طرح کیا۔ وفاقی و صوبائی نگران حکومتوں کے معاملے پر مشاورت کے حوالے سے ڈیڈ لاک کا خدشہ نہیں ہے اور کہا کہ یہ معاملہ بھی عبوری چیف الیکشن کمشنر طے کرے گا اور یہ بھی سوال ہے کہ کیا ایک بھاری چیف الیکشن کمشنر نگران وزیر اعظم کا فیصلہ کر سکتا ہے۔ سیاسی جماعتوں کو دانشمندی سے کام لینا چاہے یہ بھی ضروری نہیں ہونا چاہیے کہ ریٹائرڈ جج ہی چیف الیکشن کمشنر ہو سکتا ہے۔ کوئی دیانتدار وکیل ، بیورکریٹ بھی اس عہدے پر فائز ہو سکتا ہے۔ اس ضمن میں ترمیم ہونی چاہیے۔

مزید : صفحہ اول


loading...