عام انتخاب باوقت پر ہوتے نظر نہیں آرہے ، غلام احمد بلور مارچ میں ہونگے ،رحمن ملک

عام انتخاب باوقت پر ہوتے نظر نہیں آرہے ، غلام احمد بلور مارچ میں ہونگے ،رحمن ...

اسلام (خصوصی رپورٹ) وفاقی وزیر ریلوے غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ عام انتخابات وقت پر ہوتے نظر نہیں آ رہے، بروقت انتخابات نہ ہونے کہ وجہ بیان کرتے ہوئے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں صورت حال کے پیش نظر شاید بروقت انتخابات نہ ہو سکیں۔ میڈیا سے گفتگو میں ان کا مزید کہنا ہے کہ حکومت کو پورا وقت نہ ملا تو آئندہ کوئی حکومت وقت پورا نہیں کر سکے گی خطے میں دیرپا امن کے لئے انہوں نے تجویز پیش کرتے ہوئے پاکستان، افغانستان، بھارت، بنگلہ دیش پر مشتمل کنفیڈریشن بنانے کا بھی مشورہ دیا۔

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک)سینئر مشیرداخلہ رحمان ملک نے عام انتخابات کی تاریخ کا اعلان کردیا ہے اورکہا ہے کہ الیکشن آئندہ سال مارچ میں منعقد ہوں گے۔ لندن میں پاکستانی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ ن نے جلد الیکشن کرانے کیلئے سازشیں کیں۔انہوں نے بتایاکہ حکومت چیف جسٹس آف پاکستان افتخار محمد چودھری کے خلاف ریفرنس بھیجنے کاکوئی ارادہ نہیں رکھتی۔مشیر داخلہ نے کہاکہ حکومت میں ہوتے ہوئے بھی اپوزیشن میں ہیں۔اے این این کے مطابق رحمان ملک نے مزید کہا ہے کہ بھارت سربجیت سنگھ کو جاسوسی کےلئے پاکستان بھیجنے پر معافی مانگے ، بھارت بتائے انصاری جیسے کتنے انتہا پسند پاکستان بھیجے ہیں جو دہشت گردوں کیساتھ ملکر کام کررہے ہیں ؟ ممبئی حملوں سے پاکستانی ریاست یا کسی ادارے کا کوئی تعلق نہیں تھا‘ کراچی میں کنٹرول روم قائم کرنے کا بھارتی دعویٰ بے بنیاد ہے،ابوجندل کراچی جیسے شہر میں ٹھہرا ہے جہاں روزانہ پانچ ، سات ہلاکتیں ہوتی ہیں ، بھارت سے آنیوالے غیر ریاستی عناصر کراچی کو غیر مستحکم کررہے ہیں ، پاکستان اوربھارت کو اپنے مشترکہ دشمن کو پہچاننا ہوگا، انہوں نے کہاکہ بھارت نے اپنے ملک میں ہونیوالے پانچ واقعات کی ذمہ داری پاکستان پر ڈالی اور سمجھوتہ ایکسپریس سمیت خودبھارتی اداروں کی تحقیقات میں یہ تمام الزامات غلط ثابت ہوئے ۔انہوں نے کہاکہ ذبیح الدین انصاری عرف ابو جندل بھی بھارتی ہے ، بھارت کی جانب سے کراچی میں کنٹرول روم قائم کرنے کے الزامات بے بنیاد ہیں ، اب بھارت کو بتانا چاہیے کہ انصاری جیسے مزیدکتنے انتہا پسند پاکستان بھیجے گئے ہیں جو کراچی کو غیر مستحکم کررہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ کراچی کے لیاری اورکٹی پہاڑی جیسے علاقوں میں ایسے ہی لوگ مداخلت کررہے ہیں ، ابوجندل کراچی میں ٹھہرا ہے جہاں روزانہ پانچ سے سات ہلاکتیں ہوتی ہیں ، بھارت کو یہ بھی بتانا چاہیے کہ ڈیوڈ ہیڈلے کو فنڈنگ کون کرتا رہا ہے ، ایسے لگتا ہے کہ ممبئی حملے دو پڑوسی ملکوں کو لڑانے کی سازش تھی ، اگر سیاسی قیادتیں دانش مندی کا مظاہرہ نہ کرتیں تو پاکستان اور بھارت کے درمیان جنگ ہو چکی ہوتی ۔انہوں نے کہاکہ بھارت کو ابو جندل کے حوالے سے پاکستان کے ساتھ معلومات کا تبادلہ کرنا چاہیے اور دونوںملکوں کواپنے مشترکہ دشمن کو پہچاننا چاہئے، انہوںنے کہاکہ پاکستان میں طالبان اور دیگر دہشت گرد گروپوں نے سرگرمیاں جاری رکھی ہوئی ہیں ، بھارتی میڈیا ہمیشہ ہر معاملے کا الزام آئی ایس آئی پر لگاتا رہا اور بعدمیں بھارتی ادارے کلیئر کرتے رہے ہیں ، بھارت کے پاس شواہد ہیں تو فراہم کرے ذمہ داران کیخلاف کارروائی کی جائے گی ۔ ہم نے جن لوگوں کو پکڑا ہے ان کے مقدمات عدالتوں میں ہیں، ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ عدلیہ کی آزادی کیخلاف کوئی قانون سازی کی جارہی ہے، ہم ملک کی بہتری کیلئے کام کرنا چاہتے ہیں،ہم آئین و قانون کے مطابق چلیں گے ، چیف جسٹس افتخارمحمد چودھری نے اپنے بیٹے کو انصاف کے کٹہرے میں لاکھڑا کیا ان کا کردارقابل تحسین ہے۔ انہوں نے کہاکہ نوازشریف نے بے نظیربھٹو کے ساتھ میثاق جمہوریت پر دستخط کیے تھے مگر آج وہ اپنے وعدے بھول گئے ہیں۔مسلم لیگ (ن) کے وکلاءبڑے قابل ہیں وہ ہرمعاملے میں حکم امتنازعی لینے کی مہارت رکھتے ہیںجبکہ ہمارے وکلاءدلائل نہیںدے سکتے۔شہبازشریف آج بھی حکم امتناعی پر چل رہے ہیں جبکہ نیب میں ان کے مقدمات پڑے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ نادرا کا ریکارڈ کسی کو نہیں دیا، اگر اس بارے میں الزامات ثابت ہوجائیں تو بے شک پھانسی دے دی جائے۔ صدر زرداری کے خلاف لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے پر پارٹی قیادت لائحہ عمل طے کرے گی۔ شہباز شریف بھی اپنے دفتر میں سیاسی کام کرتے ہیں۔

مزید : صفحہ اول


loading...