فیڈریشن کیخلاف سازشوں کو ناکام بنادینگے، دلوں کا بٹوارہ قبول نہیں، احسن اقبال

فیڈریشن کیخلاف سازشوں کو ناکام بنادینگے، دلوں کا بٹوارہ قبول نہیں، احسن ...

لاہور(کلچرل رپورٹر) پاکستان مےں فےڈرےشن کے خلاف سازشوں کو ناکام بنا دےں گے دلوں اور علاقوں کا بٹوارہ قبول نہےں۔ عدلےہ کی جدوجہد کی وجہ سے آج فوج کے ساتھ سازباز کرنے کےلئے کوئی بھی تےار نہےں۔اگر پاکستان اپنی ملکی خود مختاری مانگتا ہے تو پھر افغانستان کے اندرونی معاملات مےں مداخلت سے بھی بازرہے۔ان خےالات کا اظہار پاکستان مسلم لےگ کے ڈپٹی سےکرٹری جنرل احسن اقبال نے ٹےک سوسائٹی کلب کی نےا وزےر اعظم اور پاکستان کے مستقبل کے موضوع پر منعقد ہونے والی فکری نشست مےں کےاجس مےں زبےر شےخ، احمد اوےس ، جمےل گشکوری، محمودالرحمن چغتائی، عبدالمجےد خان،ڈاکٹر محمد صادق اور قےوم نظامی نے بھی اظہار خےال کےا۔احسن اقبال نے مزےد کہا کہ حکومتوں کی مسلسل ناقص کارکردگی اور فوج کی باربار مداخلت کی وجہ سے پاکستانی عوام ناامےد او ر ماےوس ہو چکے ہےںلےکن ےہ حالات وقتی ہےں مستقل نہےں۔ اب دنےا مےں سائکلوجےکل وار کا دور ہے۔ تمام قباحتوں کے باوجود پاکستان کی سےاست بھارت سے بہتر ہے جو کہ انڈر ورلڈ کے ماتحت ہےں لےکن نظام کے تسلسل کی وجہ سے بھارت مےں ادارے مضبوط ہوچکے ہےں۔پاکستان کو اس وقت بہت سے چےلےنجزکا سامنا ہے لےکن ان سے نبٹا جا سکتا ہے۔ ہمارے پاس ناکام اکنامک پالےسےوں کو ٹرن اراونڈ کرنے کی صلاحےت ہے۔ پاکستان مسلم لےگ نواز کارکردگی کی بنےاد پر سےاست کرنا چاہتی ہے نہ کہ کھوکھلے نعروں کی بنےاد پر۔ خوش آئند بات ےہ ہے کہ پاکستان مےں کبھی سوچا بھی نہےں جا سکتا تھا کہ اےجنسےوں کے اٹھائے ہوئے لوگ اپنے گھروں مےں لوٹ آئےں گے لےکن چےف جسٹس افتخار محمد چودھری نے ےہ پاکستان کی تارےخ مےں پہلی مرتبہ کر دکھاےا۔ پاکستانی قوم کو فےصلہ کرنا ہو گا کہ نارتھ کورےا اور اےران کا ماڈل اپنانا ہے کہ ترکی ماڈل۔ آزادی رائے کی وجہ سے پاکستان کے شہرےوں نے پاکستان کے معاملات کو سدھارنے کے واسطے اپنا کردار ادا کرنا شروع کر دےا ہے۔ پاکستان کی اکنامک رےفارمز سرتاج عزےز سے بھارتی صدر منموہن سنگھ نے راہنمائی کےلئے منگوائے۔ پنجاب بار کونسل کے سابق صدر احمد اوےس نے کہا کہ پاکستان مےں ماضی مےں بندوق کے زور پر حکومت پر قبضہ کرنے والوں کو عدالتےں جواز کا سرٹےفکےٹ دےتی رہےں لےکن اب اےسا ناممکن ہے۔ دنےا کے کامےاب ملکوں مےں پہلے مضبوط عدالتی نظام آےا تب ہی جمہورےت اور دوسرے نظام کامےاب ہوسکے۔جہاں ظلم ہو وہاں مملکتےں کامےاب نہےں ہوتےں۔ پاکستان امرےکہ کا ساتھ نہ دےتا تو آج ےہاں بم دھماکے نہ ہوتے اور نہ ہی ہماری معیشت تباہ ہوتی۔ وزےراعظم اور صدارتی محلات کے اخراجات تو بڑھتے چلے جا رہے ہےں جبکہ عوام بھوک و افلاس کے ہاتھوں خودکشےاں کرنے پر مجبور ہےں۔ سخت احتساب ہی پاکستان کے مسائل کا حل ہے۔ راجہ پروےز اشرف کے خلاف کرپشن ثابت ہونے پر عدالت نے ان کے خلاف کارروائی کا حکم دےا جبکہ حکومت نے ان کو وزےر اعظم بنا دےا ۔ سوئٹزر لےنڈ کے فرسٹ کلاس مجسٹرےٹ کے سامنے پاکستانی صدر کو پےش کرتے ہوئے حکمرانوں کو بہت شرم آرہی ہے جبکہ ملک کے عوام کا پےسہ لوٹنے کی تھرڈ کلاس حرکت پر کوئی پشےمانی نہےں۔ پاکستان مےں کرپشن کے خاتمے کےلئے لائرز اپنا بھرپور کردار ادا کرےں گے کےونکہ سسٹم کو بچانے کےلئے گرافٹنگ کی نہےں انقلابی اقدامات کی ضرورت ہے۔

مزید : ایڈیشن 1


loading...