چیف الیکشن کمشنر انتخابات کو شفاف بنانے کیلیے فول پروف انتظامات کروائیں،برجیس طاہر

چیف الیکشن کمشنر انتخابات کو شفاف بنانے کیلیے فول پروف انتظامات ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)وفاقی وزیر برائے اُمورکشمیر و گلگت بلتستان چوہدری محمد برجیس طاہر نے کہاہے کہ چوہدری مجید کی تعنیات کردہ ضلعی انتظامیہ کی موجودگی میں الیکشن کی شفافیت پر بے شمار سوالات کھڑے ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ نگران سیٹ اپ کی عدم موجودگی اور وزیر اعظم کے من پسند جانبدار افسران کی موجودگی میں صاف وشفاف انتخابات کا انعقاد ایک انتہائی مشکل عمل ہو گا۔انہوں نے کہا کہ ایسی سیاسی جماعت جس نے 2011 ء کے الیکشن جعلی ووٹر لسٹوں کی مد د سے جیتے ، بعدازاں جن کا خاتمہ موجودہ چیف الیکشن کمشنر نے دن رات کی محنت سے کمپیوٹر رائزڈ لسٹیں بنوا کر کیا ، ایسی سیاسی جماعت سے کچھ بعید نہیں کہ وہ اس مرتبہ دھاندلی کی کوئی اور راہ نکال لے اور اس سلسلے میں ضلعی انتظامیہ کے جانبدار اہلکار اور افسران اس ضمن میں اپنا مذموم کردار ادا کرسکتے ہیں۔چوہدری محمد برجیس طاہر نے کہا کہ ایسی اطلاعات بھی آ رہی ہیں کہ وزیراعظم چوہدری مجید نے اپنے وزراء پر مشتمل ایک کمیٹی بنائی ہے جو انتخابات میں دھاندلی کی منصوبہ بندی کر رہی ہے جس کی روک تھام کے لیے ضروری ہے کہ انتخابات ہر صورت میں فوج کی نگرانی میں کروائیں جائیں اور اس کے علاوہ غیر جانبدار سرکاری افسران اور ضلعی انتظامیہ کا تقرر عمل میں لایاجائے۔ انہوں نے کہاکہ انہیں کئی اضلاع سے ضلعی انتظامیہ کی جانبداری کی اطلاعات بھی مل رہی ہیں ۔وفاقی وزیر نے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر آزادکشمیر نے پیش آمدہ انتخابات کو صاف و شفاف بنانے کے لیے کمپیوٹر ائزڈ ووٹر لسٹیں تیارکروانے کے علاوہ متعدد احسن اقدامات کیے ہیں ان اقدامات کو فول پروف بنانے کے لیے ضروری ہے کہ جانبدار سرکاری اہلکار اور ضلع انتظامیہ کی جگہ غیر جانبدار افسران کا تقر ر عمل میں لایا جائے تاکہ کسی بھی حلقے کی جانب سے دھاندلی جیسے خدشات اور تحفظات کا تدارک کیا جاسکے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر