پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت سب زیادہ منصوبے مکمل کیے ہیں،ممتاز شاہ

پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت سب زیادہ منصوبے مکمل کیے ہیں،ممتاز شاہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی (اسٹاف رپورٹر)چیف سیکریٹری سندھ سیدممتاز علی شاہ نے کہا ہے کہ سندھ وہ صوبہ ہے جس نے پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت سب زیادہ منصوبے مکمل کئیے ہیں،کسی دوسرے صوبے میں اتنے کام نہیں ہوئے جتنے سندھ میں ہوئے ہیں،صوبے کے 350 اسکولز نجی شعبے نے گود لئیے ہیں اور وہ ان اسکولز میں بہترین تعلیم دے رہے ہیں،سندھ میں بزنس مین اور سرمایہ کاروں کو تمام سہولتیں فرام کررہے ہیں،وہ مقامی ہوٹل میں روٹری کلب کراچی پلاٹنئیم کے عہدے داروں کی تقریب حلف برداری سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے،اس موقع پر روٹری کلب کے نو منتخب صدر رضوا ن آدھیا،معروف بلڈر و آباد کے سابق چئیرمین محسن شیخانی،کلب کی جنرل سیکریٹری نورین خان،شاہد احمد اور شعیب خان نے بھی خطاب کیا،تقریب میں روس، جرمنی،افغانستان،فلپائن،انڈونیشیاء،ویتنام ودیگر ملکوں کے سفارتکاروں کے علاوہ کمشنر کراچی افتخار احمد شلوانی،ڈی آئی جی جاوید عالم اوڈھو ودیگر نے شرکت کی،تقریب میں چیف سیکریٹری سمیت دیگر کو ایوارڈ دئیے گئے،چیف سیکریٹری ممتاز علی شاہ نے مزید کہا کہ ماضی کے مقابلے میں کراچی میں امن کی صورتحال بہت بہتر ہے،حکومت نے دہشتگردی کا جڑ سے خاتمہ کیا،آج دہشتگردوں کو چھپنے کی جگہ نہیں مل رہی،انہوں نے کہا کہ حکومت نے بزنس مین کمیونٹی کو پر امن ماحول فراہم کررہے ہیں،بزنس مین اور سرمایہ کاروں کو چاہئیے کہ وہ یہاں پر اپنی سرگرمیوں میں اضافہ کریں،حکومت مکمل سپورٹ کرے گی،روٹری کلب کی جانب سے تقریب پر مدعو کرنے پر شکریہ ادا کرنے پر چیف سیکریٹری نے کہا کہ وہ روٹری کلب سے 1993 سے منسلک ہے،انہوں نے مختلف شعبوں میں اچھے کام کئیے ہیں،روٹری کلب بین الاقوامی ادارہ ہے اور یہاں ایک دوسرے سے ملاقات اور خیالات کا تبادلہ کرنے کا موقع ملتا ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت تنہا عوام کے مسائل حل نہیں کر سکتی ہے،اس کے لئیے روٹری کلب جیسے اداروں کو فعال کردار ادا کرنا ہوگا،رضوان آدھیا نے کہا کہ روٹری کلب کراچی پلاٹنئیم ایک غیر سیاسی اور غیر فرکاوارانہ اورگنائزیشن ہے جس کا کام عوام کی خدمت کرنا ہے،نومبر 2017 میں قائم ہونے والی اس تنظیم نے قلیل مدت میں بہت سے شعبے میں کام کیے ہیں،صوبے میں غذا کی قلت کے سبب ہزاروں بچے موت کے نہ میں چلے جاتے ہیں،ہماری کوشش ہوگی کہ اس مسئلے پر کام کیا جائے،انہوں نے کہا کہ میں ذمہ داری سنبھالنے کے بعد میری یہ کوشش ہوگی کہ زیادہ سے زیادہ عوام کی بھلائی کے لئے کام کروں