رانا ثناءاللہ کی گرفتاری سیاسی نہیں قانونی معاملہ، وفاقی کابینہ کا ارکان اسمبلی کے پروڈکشن آرڈرز کے قوانین میں ترمیم کا فیصلہ

رانا ثناءاللہ کی گرفتاری سیاسی نہیں قانونی معاملہ، وفاقی کابینہ کا ارکان ...
رانا ثناءاللہ کی گرفتاری سیاسی نہیں قانونی معاملہ، وفاقی کابینہ کا ارکان اسمبلی کے پروڈکشن آرڈرز کے قوانین میں ترمیم کا فیصلہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعظم عمران خان نے رانا ثناءاللہ کی گرفتاری کو سیاسی نہیں بلکہ قانونی معاملہ قرار دے دیا۔وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونے والا وفاقی کابینہ کا اجلاس ختم ہوگیا ہے جس میں اہم فیصلے کیے گئے ہیں۔ وفاقی کابینہ نے جرائم پیشہ افراد کیخلاف گھیرا تنگ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ بے نامی جائیدادوں کیخلاف کارروائی کل رات سے شروع کی جائے گا۔ خیال رہے کہ ٹیکس ایمنسٹی سکیم 3 جولائی کو رات 12 بجے ختم ہوجائے گی۔ اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد کانیاماسٹرپلان ایک ماہ میں تیارکرنے کی ہدایت کردی۔ وزیر اعظم نے ایئرپورٹ پر تعینات عملے کے رویے میں تبدیلی لانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ تمام ایئر پورٹس پر سہولیات کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔ وزیر اعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ کے اجلاس سے خطاب میں رانا ثناءاللہ خان کی گرفتاری پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ رانا ثناءاللہ کی گرفتاری سے حکومت کا کوئی لینا دینا نہیں ہے ،ان کی گرفتاری سیاسی نہیں بلکہ قانونی معاملہ ہے اور کوئی بھی قانون سے بالا تر نہیں ہے۔وفاقی کابینہ نے یہ بھی فیصلہ کیا ہے کہ منی لانڈرنگ اور کرپشن میں ملوث ارکان اسمبلی کے پروڈکشن آرڈرز جاری نہیں کیے جائیں گے ۔ نہ انہیں جیل میں اے کلاس سہولیات فراہم کی جائیں گی اور نہ انہیں سیاسی قیدی قرار دیا جائے گا۔ وزیر اعظم نے پروڈکشن آرڈرز اور جیل کے قوانین میں ترمیم کی ہدایت کرتے ہوئے معاملہ وزارت قانون کے سپرد کردیا ہے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -