پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ،متعلقہ حکام کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کیلئے متفوق درخواست منظور

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ،متعلقہ حکام کے خلاف توہین عدالت کی ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)پٹرول کی قیمتوں میں حالیہ اضافہ پر متعلقہ حکام کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کے لئے لاہورہائی کورٹ میں متفرق درخواست دائر کردی گئی،درخواست میں پٹرول بحران کی ذمہ دارکمپنیوں کے خلاف فوجداری کارروائی کی استدعا بھی کی گئی ہے،چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان آج 2جولائی کو اس درخواست کی سماعت کریں گے۔درخواست گزار شبیر حسین کی طرف سے موقف اختیار کیا گیاہے کہ عدالت کے نوٹس لینے کے باجود وفاقی حکومت نے پٹرول کی قیمت 74 روپے سے بڑھا کر 100 روپے سے زائد کر دی ہے، وفاقی حکومت کا پیٹرول کی قیمت بڑھانے کا نوٹیفکیشن نہ صرف غیر قانونی بلکہ توہین عدالت کے زمرے میں بھی آتا ہے، وفاقی حکومت نے زیر سماعت کیس میں پیٹرول کی قیمت بڑھا کر عدالتی کارروائی میں مداخلت کی ہے،پیٹرول کی قلت کیخلاف دائر درخواست درخواست میں ترمیم کرنے سے معاملے کو احسن طریق سے حل کرنے میں معاونت ملے گی، عدالت سے استدعاہے کہ پٹرول کی قلت کے خلاف دائردائر درخواست میں ترمیم کرنے کی اجازت اوروفاقی حکومت کی جانب سے پٹرول کی قیمتیں بڑھانے کا نوٹیفکیشن غیر قانونی قرار دے کر کالعدم کیا جائے۔درخواست میں مزید استدعا کی گئی ہے کہ وفاقی حکومت کو دوبارہ پیٹرول کی قیمت 74 روپے مقرر کرنے اورپٹرول کی قلت پیدا کرنے والی تمام کمپنیوں کے خلاف فوجداری کارروائی کا حکم دیا جائے،رجسٹرار آفس نے متفرق درخواست سماعت کے لئے منظور کرلی ہے،اس درخواست پر چیف جسٹس آج 2جولائی کو سماعت کریں گے۔

متفرق درخواست

مزید :

صفحہ آخر -