جندول،عوام کا کئی دنوں سے بجلی سپلائی معطل ہونے پر احتجاج

جندول،عوام کا کئی دنوں سے بجلی سپلائی معطل ہونے پر احتجاج

  

جندول(نمائندہ پاکستان)جندول تحصیل ہیڈکوارٹر ثمرباغ کیلئے منظور شدہ ایکسپریس لاین سے واپڈاء کی جانب سے غیر متعلقہ تحصیل منڈہ کے یونین کونسل شالکنڈی کو بجلی دینے اور ثمرباغ میں کئی دنوں سے بجلی بندش پر مقامی عوام اور ایکشن کمیٹی کا شدید احتجاج۔ اسسٹنٹ کمشنر جندول طارق حسین نے فوری نوٹس لیتے ہوئے واپڈاء اہلکاروں کو دفتر طلب کر لیا۔مقامی مشرانکے مطابق تحصیل ثمرباغ میں گذشتہ بارہ سال سے بجلی کمی کی وجہ سے مختلف یونین کونسلوں کے مابین تین نمبروں پر تقسیم تھی اور تین دن بعد ہر علاقے کا نمبر آتا تھا۔پارلیمانی سیکرٹری و ممبرقومی اسمبلی محمد بشیر خان کی کوششوں سے اس سال ایکسپریس لائن ثمرباغ مکمل ہوا تو ثمرباغ کے عوام کا دیرینہ مسئلہ حل ہوگیا اور عوام کو لوڈشیڈنگ و بجلی نمبر سے چٹکارا مل گیا۔جون کے مہینہ میں واپڈاء حکام نے چوری چپے بیس کلومیٹر دور نشیبی تحصیل منڈا کے یونین کونسل شالکنڈی کو غیر قانونی بجلی کنکشن دیا جس کے بعد ایکسپریس لائن سے ثمرباغ کی بجلی مکمل خراب ہوگئی تھی اور جون کا مہینہ عوام نے شدید اذیت میں گذارا۔ابھی گذشتہ چند دن پہلے معلوم ہوا کہ واپڈاء والوں نے ایکسپریس لاین کی بجلی غیر متعلقہ تحصیل کے یونین کونسل کو دی ہے تو تحصیل ثمرباغ کے عوام نے شدید احتجاج کیا۔احتجاج کا اسسٹنٹ کمشنر جندول طارق حسین و ایڈیشنل اسسٹنٹ کمشنر یونس خان نے نوٹس لیا اور واپڈاء حکام مقامی مشران اور ایکشن کمیٹی کا اجلاس ٹی ایم اے ریسٹ ہاوس ثمرباغ میں طلب کیا جہاں آل پارٹی مشران سابق تحصیل ناظم سعید احمد باچہ، سابق ضلعی کونسلر مولانا محمد عمران، سابق امیدوار پیپلز پارٹی محمد اقبال، ممتاز تاجر و سماجی کارکن سلیم خان، دوست رحمان،شامراد خان،حاجی حیات اللہ،اجمل وردگ، اظہار الحق درانی ودیگر نے واپڈاء ھکام کے سامنے بجلی مسائل رکھے انتظامیہ کے افسران اور مقامی مشران نے واپڈاء حکام کی سرزنش کی اور مقامی عدلیہ و انتظامیہ سے بھی سخت نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔مشران نے چوبیس گھنٹے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا کہ اگر واپڈاء حکام نے ایکسپریس لائن سے غیر متعلقہ علاقہ کو نہ ہٹایا تو دمام دم مست قلندر کرینگے۔واپڈاء حکام نے فوری غیر متعلقہ علاقہ کی بجلی کاٹنے کا اعلان کر دیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -