گھروں میں بھوک:حکومت شادی ہالز کھولنے کی اجازت دے، طارق محبوب

      گھروں میں بھوک:حکومت شادی ہالز کھولنے کی اجازت دے، طارق محبوب

  

ملتان(نیوز رپورٹر) شادی ہال ایسوسی ایشن ملتان سرپرست اعلی حاجی طارق محبوب،چیرمین حسن محمود خان،صدرمیاں نصرت حسین،جنرل سیکرٹری محمد کاشف ظفر نے ملتان پریس کلب میں پریس کانفرس کرتے ہوئے کہا کہ میر ج ہال ایک بہت بڑی انڈسڑی بن چکی(بقیہ نمبر48صفحہ6پر)

ہے جس سے لاکھوں لوگوں کاروزگار وابستہ ہے اور آج یہ انڈسڑی کئی ماہ سے بند ہو نے کی وجہ سے تباہی کے دہانے پر آگئی ہے اور اس سے وابستہ لاکھوں لوگ بے روزگار ہوکر بھوک اور افلاس کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ ہمارے میرج ہال 14.03.2020 کو 3 ہفتے کے لیے بوجہ کورونا بند کردیے گئے تھے اس وقت ہمارا سیزن پورے عروج پر تھا اور اچانک میرج ہال بند ہونے کی وجہ سے ہمیں بہت زیادہ نقصان اٹھانا پڑا۔لوگوں کے فنکشن کینسل کرتے ہوئے ایڈوانس میں لی گئی رقم کو واپس کیا جس کی وجہ سے ہمیں بہت نقصان ہواآج ساڑھے تین ماہ ہوگئے ہیں میرج ہال بند رہنے کی وجہ سے ہمیں بہت مالی نقصان کا سامناہے اس وقت یہ حالات ہیں کہ مالکوں کے پاس کھانے کے پیسے بھی ختم ہوچکے ہیں اورمیرج ہال،بلڈنگ کاکرایہ کا بھی ادا کرنے کے لیے پیسے نہیں ہیں بلکہ قرض چڑھ چکا ہے ہم لاکھوں روپے کے مقروض ہوچکے ہیں ملازمین جن کی تنخواہیں لاکھوں میں ہیں ہم کہاں سے ادا کریں۔جب وزیر اعظم اور وزیر اعلی ہاؤس میں تقریبات،عشائیے منعقد کیے جا سکتے ہیں تو میرج ہال کھولنے کی اجازت کیوں نہیں دی جاسکتی۔ہم وزیر اعظم پاکستان،وزیر اعلی پنجاب،گورنر پنجاب،چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان اور چیف آف آرمی سٹاف سے گزارش کرتے ہیں کہ ہمیں بھوکا مرنے سے بچائیں اور میرج ہالز کو کھولنے کی اجازت دیں۔ہم حکومت کی جانب سے جاری کردہ SOPsپر سختی سے عمل کرنے کے پابند ہونگے۔اگر 15جولائی تک ہمیں میر ج ہال کھولنے کی اجازت نہیں دی تو ہم خود میرج ہال کھو ل لیں گے اور ہمارے مطالبات پورے نہ کیے گئے تو ہم کمشنر و ڈی سی آفس کے سامنے دھرنہ دیں گئے جو کہ مطالبات پورے ہونے تک جاری رہے گا۔پریس کانفرنس سے قبل شادی ہال ایسوسی ایشن سرپرست اعلی حاجی طارق محبوب،چیرمین حسن محمود خان،صدرمیاں نصرت حسین،جنرل سیکرٹری محمد کاشف ظفر کی قیادت میں چوک نواں شہر پراحتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں ممبران اور میرج ہال ملازمین نے کثیر تعداد میں شرکت کی اور اپنے مطالبات کے حل کے لیے نعرے لگائے۔

طارق محبوب

مزید :

ملتان صفحہ آخر -