نشترہسپتال:قواعد کے برعکس ڈاکٹرز کے تبادلے

نشترہسپتال:قواعد کے برعکس ڈاکٹرز کے تبادلے

  

ملتان ( وقا ئع نگار )نشتر میڈیکل کالج کے پرنسپل نے سیکرٹری ہیلتھ کے اختیارات استعمال کرتے ہوئے قواعد کے(بقیہ نمبر32صفحہ7پر)

برعکس 42 ڈاکٹروں کا تبادلے کے احکامات جاری کردیے ہیں۔جسکے ڈاکٹروں کے اندر بے چینی کی فضاء قائم ہوگئی ہے۔مزید برآں مذکورہ پرنسپل نے ایک لیڈی ڈاکٹر پر بھی نوازشات کی بارش کردی ہے۔جس کے تھیسیس اور ایم فل کی پڑھائی نامکمل ہے۔نشتر ہسپتال ذرائع کے مطابق نشتر میڈیکل کالج کے پرنسپل افتخار حسین خان نے ایک روز قبل نشتر ہسپتال کے بیالیس ڈاکٹروں کے تبادلے کردیئے ہیں۔جوکہ صحت رولز کے برعکس ہیں۔حالانکہ صوبائی سیکرٹری ہیلتھ ہی کو اختیارات ہیں کہ وہ ایسے احکامات جاری کریں۔مگر مذکورہ پرنسپل کی جانب سے من مانیاں برقرار ہیں۔پنجاب کے کسی بھی میڈیکل کالج میں ڈاکٹروں کے ایسے تبادلے نہیں ہوئے ہیں۔ڈاکٹر افتخار خان اپنی ہٹ دھرمی پر بدستور قائم ہیں۔سینئر و جونیئر ڈاکٹرز انکے ناروا رویوں سے شدید پریشان ہیں۔ مزید برآں نشتر ہسپتال ذرائع نے یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ پرنسپل ڈاکٹر افتخار خان مذکورہ ہسپتال کی ایسی ایک لیڈی ڈاکٹر بختاور پر مہربان ہوئے پڑے ہیں۔جسکی ایم فل کی پڑھائی اور تھیسیس نامکمل ہیں۔اسکو مختلف بہانوں سے خلاف قانون پہنچا رہے ہیں۔طبی حلقے نشتر میڈیکل کالج کے پرنسپل کے روز بروز ناجائز اختیارات کے استعمال اور من مانیاں سے تنگ آگئے ہیں۔

کالج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -