14 سالہ معصوم بچے کے اندھے قتل اور ڈکیتی کی واردات کرنے والے اس کے خالو اور دو قریبی رشتہ دار گرفتار

14 سالہ معصوم بچے کے اندھے قتل اور ڈکیتی کی واردات کرنے والے اس کے خالو اور دو ...
14 سالہ معصوم بچے کے اندھے قتل اور ڈکیتی کی واردات کرنے والے اس کے خالو اور دو قریبی رشتہ دار گرفتار

  

لاہور(خبر نگار) سی سی پی او لاہور زولفقار حمید کی ہدایت پر انویسٹی گیشن پولیس لیاقت آباد نے14سالہ معصوم بچے کے اندھے قتل اور ڈکیتی کی واردات کا سراغ لگا کر مقتول کم سن بچے کے سگے خالو عبدالقیوم کو دو قریبی رشتہ داروں سمیت گرفتار کرلیا ہے اور دوران ابتدائی تفتیش گرفتار ملزمان کی نشانی دہی پر آلہ قتل چھری، پسٹل اور مسروقہ 2لاکھ روپے نقدی،چیک بک،پاسپورٹ، شناختی کارڈ اور پیچ کس برآمدکر لیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سی سی پی او لاہور زولفقار حمید کی ہدایت پر ایس ایس پی انویسٹی گیشن ذیشان اصغر نے ایس پی ماڈل ٹاؤن انویسٹی گیشن سید اسد مظفر کی سربراہی میں انویسٹی گیشن پولیس لیاقت آباد پر مشتمل لیاقت آباد میں ڈکیتی قتل کے اندھے واقعہ کا سراغ لگانے کےلئے ایک سپیشل ٹیم تشکیل دی اور ایس پی انویسٹیگیشن ماڈل ٹاؤن سید اسد مظفر کی نگرانی میں قائم اس سپیشل ٹیم نے شب وروز محنت کر کے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے کارروائی کرتے ہوئے 2ہفتے قبل14سالہ معصوم بچے نبیل کے اندھے قتل معہ ڈکیتی کی واردات کو ٹریس کر کے 3ملزمان بچے کے سگے خالوعبدالقیوم اور اس کے قریبی رشتہ دار طیب اور سلمان کو گرفتارکر لیا ہے۔

ملزم عبدالقیوم نے انکشاف کرتے ہوئے بتایا کہ اس نے2مرلے کا گھر ہتھیانے کے لئے اپنی سالی کے 14سالہ بیٹے نبیل کوقتل کرنے کا منصوبہ بنایا اورلالچ دے کر اپنے دوقریبی رشتہ دار ساتھیوں طیب اور سلمان کو بھی ساتھ ملا لیا۔ ملزم عبدالقیوم نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ اسے علم تھاکہ مقتول نبیل کا والد مالی اور والدہ گھروں میں کام کرتی ہے اور بچے دن بھر گھر میں اکیلے ہوتے ہیں۔لہذا اس نے اپنے ساتھیوں طیب اور سلمان کے ساتھ طوطے خریدنے کے بہانے مقتول نبیل کے گھرگیا جہاں انہوں نے اس کی 8 سالہ بہن نور فاطمہ کو چیز لینے باہر بھیج دیااور موقع کا فائدہ اٹھاتے ہوئے 14سالہ بچے نبیل کو چھریوں کے وار کر کے بے دردی سے قتل کیا اور واردات کوڈکیتی کا رنگ دینے کے لیے گھرمیں لوٹ مار کرکے موقع سے فرار ہوگئے۔

ملزم عبدالقیوم نے مزید بتایا کہ وہ نہایت چالاکی سے خود ہی مقدمے کا مدعی بن گیا اورپولیس سے قاتلوں کی فوری گرفتار ی کا مطالبہ بھی کرتا رہا۔ ایس پی انویسٹیگیشن ماڈل ٹاؤن سید اسد مظفر شاہ کے مطابق شک پڑنے پر ملزم عبدالقیوم کو شامل تفتیش کیا گیا جس پر اس نے اندھے قتل کا انکشاف کر لیا۔جس میں ملزم کی نشان دہی پر اس کے دیگر دونوں ساتھی ملزمان کو گرفتارکر لیا ہےاور ملزمان کی نشاندہی پر آلہ قتل چھری، پسٹل اور مسروقہ 2لاکھ روپے نقدی،چیک بک،پاسپورٹ، شناختی کارڈ و پیچ کس برآمدکر لیے گئے ہیں۔

ڈی آئی جی انویسٹی گیشن محبوب رشید میاں نے بروقت کارروائی سے اندھے قتل کی واردات ٹریس کرنے اور ملزمان کی گرفتاری پر پولیس ٹیم کیلئے تعریفی اسناد کا اعلان کیا ہے۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -لاہور -