وفاقی حکومت کا خسارے میں چلنے والے سیاحتی اداروں کی ری سٹرکچرنگ کا فیصلہ،پی ٹی ڈی سی کے سینکڑوں ملازم بیک جنبش فارغ

وفاقی حکومت کا خسارے میں چلنے والے سیاحتی اداروں کی ری سٹرکچرنگ کا فیصلہ،پی ...
وفاقی حکومت کا خسارے میں چلنے والے سیاحتی اداروں کی ری سٹرکچرنگ کا فیصلہ،پی ٹی ڈی سی کے سینکڑوں ملازم بیک جنبش فارغ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی حکومت نےخسارےمیں چلنےوالےسیاحتی اداروں کی ری سٹرکچرنگ کافیصلہ کر لیا ہےجبکہ پاکستان ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن نےتمام ملازمین کونوکریوں سےفارغ کرتےہوئےبرطرفی کاپروانہ جاری کردیا ہے، نوکریوں سے برطرفی کا پروانہ ملتے ہی سینکڑوں ملازمین پی ٹی ڈی سی دفتر  کے باہر  اہل خانہ سمیت شدید گرمی میں احتجاج کررہے ہیں۔

نجی ٹی وی  کے مطابق پی ٹی ڈی سی میں ضرورت سے زائد سیاسی بھرتیوں کو بھی ختم کیا جائے گا اور پی ٹی ڈی سی کا مکمل ڈھانچہ ازسرنوتشکیل دیا جائیگا جبکہ400سےزائدملازمین کےتمام واجبات اداکرکےنوٹس بھجوا دیے گئے ہیں۔نئے آفسز تعمیر کر کے ضرورت کے مطابق از سر نو بھرتی کی جائے گی، سیاحتی مقامات پر موجود ہوٹلز صوبوں کے حوالے کیے جائیں گے۔ پی ٹی ڈی سی کا انتظام نیشنل ٹورازم کو آرڈینیشن بورڈ کو منتقل کردیا جائے گا۔650ملین کے خسارے کی وجہ سے ری سٹرکچرنگ کی جا رہی ہے۔

دوسری طرف پاکستان ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن کی جانب سے جاری ہونے والے نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ پی  ٹی ڈی سی

نے شمالی آپریشنز بند کر دیے ہیں،آپریشن بند کرنے اور ملازمین کو نکالنے کا فیصلہ مسلسل مالی نقصان کے باعث کیا جو کورونا وبا کے دوران سیاحتی سرگرمیوں میں کمی کے باعث ہورہا ہے،ملازمین کو فارغ کرنے کا فیصلہ وفاقی حکومت اور پی ٹی ڈی سی بورڈ نے کیا ہے،فارغ ہونے والے ملازمین متعلقہ مینیجرز سے واجبات وصول کر سکتے ہیں۔

مزید :

قومی -