گجرات جیل میں سینکڑوں قیدی چھتوں پر چڑھ گئے،ہنگامہ آرائی اور پتھراؤ کے بعد پولیس کی شیلنگ ،درجنوں قیدی اور پولیس اہلکار زخمی

گجرات جیل میں سینکڑوں قیدی چھتوں پر چڑھ گئے،ہنگامہ آرائی اور پتھراؤ کے ...
 گجرات جیل میں سینکڑوں قیدی چھتوں پر چڑھ گئے،ہنگامہ آرائی اور پتھراؤ کے بعد پولیس کی شیلنگ ،درجنوں قیدی اور پولیس اہلکار زخمی

  

گجرات(مرزا نعیم الرحمان)ڈسٹرکٹ جیل گجرات میں سینکڑوں قیدی جیل انتظامیہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے چھتوں پر چڑھ گئےاور پولیس پر پتھراؤ شروع کر دیا جس پر پولیس کا قیدیوں پر آنسو گیس کا آزادانہ استعمال شروع،آنسو گیس کی شیلنگ اور پتھراؤ سے درجنوں قیدی اور پولیس اہلکار زخمی ہو گئے،جیل انتظامیہ نے بھپرے قیدیوں پر قابو پانے کے لئے پولیس کی بھاری نفری طلب کر لی,اعلیٰ افسران بھی موقع پر پہنچ گئےتاہم قیدیوں نےمطالبات کی منظوری تک چھتوں سے اترنے سے انکار کر دیا ،کئی گھنٹوں سے جاری احتجاج تاحال جاری ،پولیس نےآپریشن کی تیاریاں شروع کر دیں۔

تفصیلات کے مطابق ڈسٹرکٹ جیل گجرات میں سینکڑوں قیدیوں کا سہہ پہر تین بجے سے شروع ہونے والا احتجاج رات 8بجے تک بھی جاری ہے ،قیدیوں کے احتجاج پر تاحال قابو نہیں پایا جا سکا اور قیدی چھتوں پر چڑھے ہوئے ہیں ۔قیدیوں کے احتجاج کی اطلاع ملنے پر ڈپٹی کمشنر گجرات ڈاکٹر خرم شہزاد ڈی پی او سید حیدر پولیس کی بھاری نفری لے کر جیل کے اندر پہنچے تو قیدیوں نے پتھراؤ شروع کر دیا جس پر پولیس نے جوابی کارروائی کرتے ہوئے قیدیوں پر آنسو گیس اور فائرنگ  کر دی،پتھراؤ اور آنسو گیس کی شیلنگ سے درجنوں قیدی اور پولیس اہلکار زخمی ہو گئے، گنجان ترین علاقے میں واقع ڈسٹرکٹ جیل گجرات  میں آنسو گیس سے ارد گرد کے مکین بھی شدید متاثر ہوئے ہیں جبکہ پولیس نے پورے علاقے کو سیل کر دیا ہے۔قیدیوں نےسپریڈنٹ جیل پر ماہانہ منتھلی لینے کا الزام لگاتے ہوئے ان کی فوری  تبدیلی کا مطالبہ کیا ہے۔قیدیوں کا الزام ہے کہ جیل انتظامیہ قیدیوں کو ملنے والی خوراک اور ان کے گھروں سے آنے والا سامان  بھی باہر فروخت کر دیتی ہےجبکہ گذشتہ چار ماہ سے ان کی ملاقاتوں پر بھی مکمل پابندی ہےجسکی وجہ سے ان کی زندگی انتہائی بدتر ہو چکی ہےاوروہ اپنے پیاروں کی ایک جھلک دیکھنےکےلئےترس گئے ہیں ۔احتجاجی قیدیوں  کو کنٹرول کرنے کے لیے پورے ضلع کی پولیس کو طلب کرلیا گیا ہے جبکہ قیدیوں نے کسی سے بھی مذاکرات کرنے سے انکار کر تے ہوئےکہا ہے کہ وہ مذاکرات صرف  ڈی آئی جی جیل خانہ جات اور چیف سیکرٹری پنجاب سے کریں گے .

قیدیوں کی جانب سے پتھراؤ کے نتیجے میں کئی پولیس اہلکار زخمی ہو گئے ہیں جنہیں فوری طبی امداد کے لئے مقامی ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ پولیس نے بھی قیدیوں پر آنسو گیس اور بے دریغ شیلنگ کی ہے جس سے کئی قیدی زخمی ہوگئے ہیں ،زخمی قیدیوں کو جیل ہسپتال میں ابتدائی طبی امداد دی جارہی ہے جبکہ 6 گھنٹے سے جاری احتجاج میں اس وقت کافی کشیدگی پیدا ہو چکی ہے اور امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ کسی بھی وقت قیدیوں کے خلاف آپریشن شروع کر دیا جائے گا ۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -گجرات -