حکومت،ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو جواب داخل کرانے کا آخری موقع

حکومت،ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو جواب داخل کرانے کا آخری موقع

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس ساجد محمود سیٹھی نے پنجاب اسمبلی کے حوالے ایوان اقبال میں گورنر کی جانب سے اجلاس بلانے سے متعلق درخواست پر حکومت پنجاب اور ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو جواب داخل کرانے کا آخری موقع دیتے ہوئے سماعت 5 جولائی تک ملتوی کر دی،ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کی جانب سے جواب جمع کرانے سے متعلق مہلت طلب کی گئی تھی،تحریک انصاف کی رہنماء زینیب عمیر کی جانب سے ایڈووکیٹ اظہر صدیق نے دائردرخواست میں صدر پاکستان، گورنر پنجاب، سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کو فریق بنایا  درخواست گزار کا موقف ہے کہ آرڈیننس بدنیتی کی بنیاد پر جاری کیا گیا،ان اقدامات سے گورنر اپنی حیثیت کھو سکتے ہیں،صدر پاکستان کو بھی کہا گیا کہ گورنر پنجاب کے خلاف آئین کے آرٹیکل 101(3) کے تحت کارروائی کرکے عہدہ سے برخاست کیا جائے گورنر پنجاب نے14جون کواسمبلی کے اختیارات کے حوالے سے آرڈیننس جاری کیا، آرڈیننس سے سیکرٹری اسمبلی کے اختیارات محدود کر دیئے گئے،اجلاس نوٹیفائی، ڈی نوٹیفائی کرنے کا اختیار سیکرٹری قانون کودے دیا گیا، گورنرکاجاری کردہ اختیاررولزآف اسمبلی سے متصادم ہے اور آئین کیخلاف ہے گورنر کو پنجاب اسمبلی کا اجلاس اسمبلی سے باہر بلانے کا اختیار نہیں عدالت سے استدعاہے کہ گورنر پنجاب کا جاری کردہ آرڈیننس آئین سے متصادم قرار دیکر کالعدم کیا جائے، درخواست کے حتمی فیصلے تک آرڈینس پر عملدرآمد روکا جائے اورایوان اقبال میں بلائے گئے اجلاس کو غیر قانونی قرار دیکر کالعدم قرار دیا جائے۔

آخری موقع

مزید :

صفحہ آخر -