پراپرٹی پر15فیصد ٹیکس، وہاڑی میں ڈیلرز کا احتجاجی مظاہرہ

پراپرٹی پر15فیصد ٹیکس، وہاڑی میں ڈیلرز کا احتجاجی مظاہرہ

  

 وہاڑی (بیورورپورٹ،نامہ نگار) حکومت کی جانب سے پراپرٹی پر لگایا گیا 15 فیصد ٹیکس وہاڑی کے پراپرٹی ڈیلرز نے ظالمانہ قرار دے دیا احتجاجی مظاہرین میں وہاڑی کے معروف ڈیلر ملک عبید الرحمن سابقہ صدر پراپرٹی ڈیلرز ایسوسی ایشن.حاجی عرفان خادم عمران.میاں شہزاد ندیم،محمدعظیم چوہان،وسیم مرزا،ملک محمد ادریس،چوہدری عبدالمجید،چوہدری محمد انور،عبدالرحمان،ڈاکٹر(بقیہ نمبر9صفحہ6پر)

ناصرمحمود،شفقت حسین،ملک اللہ رکھا،چوہدری محمد نذیر،ملک ممتاز بھارا،حنیف خان ڈاہا شامل تھے مظاہرین نے احتجاج کرتے ھوئے کہا کہ حکومت کی طرف سے لگایا گیا ٹیکس ظالمانہ ھے اس کا امیر اور غریب سب پر اثر پڑے گا یہ لوگوں کا قتل عام کرنے کے مترادف ھے حکومت یہ ٹیکس آئی ایم ایف کے کہنے پر لگا رہی ھے پہلے ہی ملکی معاشی حالات ابتر ھیں پٹرول کی قیمتیں بڑھا کر اور ظالمانہ ٹیکس لگا کر عوام کا جینا بدتر کیا جارھا ھے لہذا نیا ٹیکس واپس لیکر پرانے ٹیکس کو بحال کیا جائے پی ٹی آئی کی حکومت نے پراپرٹی کے کاروبار کو انڈسٹری کا درجہ دیا تھا حکومت کا یہ ٹیکس پراپرٹی ڈیلرز کیلئے گلے کا پھندا ثابت ھوگا مشکل فیصلے یہ ھیں کہ ہر دفعہ عوام کو ہی مہنگائی کی چکی میں پیسا جائے اب حکومتی ارکان و افسران کو بھی اپنی عیاشیاں بند کرنا چاہئیں اور عوام کو ریلیف دیا جائے مظاہرین نے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر حکومت کے خلاف نعرے درج تھے انہوں نے ظالمانہ ٹیکس کی پرزور مذمت کرتے ھوئے اسے فوری واپس لینے کا مطالبہ کیا ھے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -