دو کوٹہ میں دوہرا قتل،ورثاء کا لاشیں سڑک پر رکھ کر احتجاج

دو کوٹہ میں دوہرا قتل،ورثاء کا لاشیں سڑک پر رکھ کر احتجاج

  

دوکوٹہ(نمائندہ پاکستان)دوہرے قتل کیس میں پولیس تھانہ مترو پر لواحقین کی طرف سے مبینہ ملی بھگت کا الزام  پرکئی گھنٹے روڈ پر نعشوں کو رکھ کر ورثاء نے احتجاج کیا تفصیل کے مطابق دوکوٹہ میں لرزہ خیز قتل کی دوہری  واردات میں عینی شاہدین کے مطابق قاتل  عرفان ارشد سندھو اپنی والدہ اللہ رکھی کے ہمراہ واردات کرنے آیا تھا پولیس تھانہ مترو نے صرف ملزم عرفان ارشد (بقیہ نمبر44صفحہ6پر)

سندھو کے خلاف ایف آئی آر درج کی جس پر مقتول نعمان ارشد کے سسر اور مقتولہ ناصرہ بی بی کے والد سعید احمد نے دیگر رشتہ داروں کے ہمراہ نماز جنازہ کے بعد دونوں کی نعشوں کو مترو ٹبہ سلطان پور روڈ پر رکھ کر کئی گھنٹے روڈ بلاک کرکے پولیس کے خلاف نعرے بازی کی اور احتجاج کیا ان کا موقف تھا کہ وقوعہ کے وقت مقتول کی والدہ اللہ رکھی ملزم بیٹے عرفان کے ساتھ تھی مقتولہ ناصرہ بی بی نے اپنی جان بچانے کیلیے قریبی گھر میں چھپنے کی کوشش کی تو  ملزمہ نے مبینہ طور پر بہو ناصرہ بی بی کو بالوں سے پکڑ کر نیچے گرا کر بیٹے کو کہا کہ اس کو فائر مارو ناصرہ بی بی جو کہ حاملہ تھی اور آئندہ کچھ دنوں تک اس کو ڈلیوری بھی ہونے والی تھی مظاہرین نے کئی گھنٹے احتجاج کیا اور پولیس کے خلاف نعرے بازی کی بعد ازاں پولیس نے مظاہرین سے مذاکرات کیے اور یقین دہانی کرائی کہ ملزمہ کو بھی ایف آئی آر میں نامزد کر دیا جائے گا جس پر احتجاج ختم کرکے لواحقین نے مقتولین کو سپرد خاک کر دیا تاہم ملزم عرفان کی اب تک گرفتاری نہ ہو سکی ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -