ابوالحسنات قادری مسند تدریس کی آبرو، عظیم روحانی شخصیت تھے، زوار بہادر

ابوالحسنات قادری مسند تدریس کی آبرو، عظیم روحانی شخصیت تھے، زوار بہادر

لاہور(سٹاف رپورٹر)جمعیت علماءپاکستان کے زیر اہتمام بانی صدر قائد اعظم محمد علی جناح اورڈاکٹر علامہ محمد اقبال کے ہمسفر،تحریک پاکستان کے عظیم رہنماء،غازی کشمیر حضرت علامہ سید ابوالحسنات سیداحمد قادریؒ کی یاد میں یکم جون2 شعبان المعظم کو ملک بھر میں ”یوم سید ابوالحسنات“منایا گیا۔اس سلسلہ میں لاہور میں بڑا اجتماع جامعہ محمدیہ رضویہ گلبرگ میں منعقد ہوا۔اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جمعیت علماءپاکستان کے رہنما علامہ قاری محمد زوار بہادر نے کہا کہ حضرت ابوالحسنات سید احمد قادری رحمتہ اللہ علیہ آبلہ مسجد نہ تھے بلکہ سیاسی بصیرت کے حامل جید باعمل عالم دین تھے ان کے دم قدم سے مسند تدریس کی آبرو برقرار تھی اور وہ روحانی سلطنت کے ذمہ دار فرد بھی تھے اجتماع سے حافظ نصیر احمد نورانی، رشید احمد رضوی، مولانا ثاقب افضل رضوی ِ،رانا رحمت علی ،مولانا سرفراز قادری اور دیگر علماءنے بھی خطاب کیا۔جمعیت علماءپاکستان کے سیکرٹری جنرل صاحبزادہ شاہ محمد اویس نورانی نے ”یوم سید ابوالحسنات“ کے موقع پر جامعہ حنفیہ میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حضرت علامہ سید ابوالحسنات قادری اپنے معاصر علماءو مشائخ میں نمایاں حیثیت کے مالک تھے

مزید : میٹروپولیٹن 4