10 سالوں میں 55ہزار پاکستانی شہید،80ارب ڈالر کا نقصان ہوا،فضل الرحمٰن

10 سالوں میں 55ہزار پاکستانی شہید،80ارب ڈالر کا نقصان ہوا،فضل الرحمٰن

                          پشاور(این این آئی)جمعیت علماءاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ گزشتہ دس سالوں میں 55 ہزار پاکستانی شہید جبکہ 80 ارب ڈالر کا مالی نقصان ہوچکا ہے ،اصل شدت پسند اور دہشت گرد امریکہ ہے جو اپنی طاقت کی نشے میں معاشی طور پر غیر مستحکم مسلم ممالک پر حملے کررہا ہے۔ بندوق اور ڈنڈا کسی بھی مسئلے کا حل نہیں ہوسکتے اگر مسائل کا حل نکالنا ہے تو مشاورت سے معاملات کو حل کرنا ہوگا، جمعیت علماءاسلام ف کے صوبائی سیکرٹریٹ پشاور میں طالب علموں کی دستار بندی کی تقریب میں اسلام اور سیاست پردلائل دیتے ہوئے مولانا فضل الرحمٰان نے کہا کہ علماءقرآن و سنت کے محافظ اور دین کی تبلیغ کرنے والے لوگ ہیں ۔ ہمارے مذہب اور مذہبی اداروں کو بین الاقوامی قوتیں اپنے مفاد کے لئے بد نام کررہی ہیں ۔ مدارس اور علماءکو دہشت گرد قرار دینے والے احمقوں کی جنت میں رہ رہے ہیں۔ مولانا کا کہنا تھا کہ بندوق اور ڈنڈا کسی بھی مسئلے کا حل نہیں ہوسکتے اگر مسائل کا حل نکالنا ہے تو مشاورت سے معاملات کو حل کرنا ناگزیر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات کا مقابلہ جوش کی بجائے حکمت سے کرنا ہوگا ۔ تقریب سے مولانا عبدالغفور حیدری ، وفاق المدارس پاکستان کے ناظم مولانا حنیف جالندھری اور دیگر نے بھی خطاب کیا ۔ مقررین نے تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے اور اس بات پر زور دیا کہ اسلام اور مسلم امہ کے خلاف امریکہ اور اسکے حواریوں کی سازشوں کا مقابلہ اپنی صفوں میں اتحاد و اتفاق پیدا کرکے کرنا ہوگا ۔ وقت کا تقاضہ ہے کہ دوسروں کی جنگ سے خود کو نکالا جائے ۔

مزید : صفحہ اول