بھارت تقسیم ہوگیا، آندھراپردیش میں نئی ریاست تیلنگانہ وجود میں آگئی

بھارت تقسیم ہوگیا، آندھراپردیش میں نئی ریاست تیلنگانہ وجود میں آگئی
بھارت تقسیم ہوگیا، آندھراپردیش میں نئی ریاست تیلنگانہ وجود میں آگئی

  

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت مزید تقسیم ہوگیا اور ریاست آندھراپردیش میں 10اضلاع پر مشتمل نئی 29ویں ریاست تیلنگانہ وجود میں آگئی جبکہ آئندہ دس سال کے لیے حیدرآباد دونوں ریاستوں کا مشترکہ دارلحکومت رہے گا۔بھارت کی ریاست آندھرا پردیش پیر کو باضابطہ طور پر دو حصوں میں تقسیم ہو گئی ہے اور اس میں سے ملک کی 29 ویں ریاست تیلنلگانہ وجود میں آ گئی ہے جس کے قیام کا مطالبہ 1956ءسے کیاجارہاتھا۔بھارتی میڈیا کے مطابق تیلنلگانہ کا قیام اتوار اور پیر کی درمیانی شب کو بھارت کے مقامی وقت کے مطابق رات12 بجے عمل میں آیاجس کے بعد مختلف علاقوں میں جشن شروع ہوگیا۔نئی ریاست تیلنگانہ ریاست آندھرا پردیش کے دارالحکومت حیدرآباد کے آس پاس کے دس اضلاع پر مبنی ہے لیکن حیدرآباد آئندہ دس برس کے لیے دونوں ریاستوں کا مشترکہ دارالحکومت رہے گااوراِسی دوران اندھراپردیش کو اپنا الگ دارلحکومت بناناہوگا۔یادرہے کہ جولائی 2013ءمیں مرکز میں کانگریس کی سربراہی میں حکمران اتحاد نے آندھراپردیش میں نئی ریاست تیلنگانہ کے قیام کی منظوری دی تھی اور اس کے بعد رواں سال فروری میں ملک کے ایوان بالا نے تیلنگانہ کے قیام کا بل منظور کیا تھا۔ اس فیصلے پر اس وقت آندھرا پردیش کے وزیراعلیٰ کرن کمار ریڈی احتجاجاً اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے تھے جبکہ پرانی ریاست اپنی تاریخ کے بڑے حصے کے دوران ساحلی آندھرا پردیش کے زیادہ خوشحال اور بااثر طبقات کے کنٹرول میں رہی اور یہ شکایت عام رہی کہ انھوں نے غریب اور پسماندہ تیلنگانہ کے ساتھ معاشی سماجی اور دوسرے شعبوں میں انصاف نہیں کیااور یوں وقفے وقفے سے تلنگانہ کو علیحدہ ریاست بنانے کا مطالبہ سر اٹھاتا رہا۔

مزید : رئیل سٹیٹ /اہم خبریں