افغانستان سے نیٹو انخلاءسے قبل سول ایوی ایشن اتھارٹی کو13سال بعد واجبات یاد آگئے

افغانستان سے نیٹو انخلاءسے قبل سول ایوی ایشن اتھارٹی کو13سال بعد واجبات یاد ...
افغانستان سے نیٹو انخلاءسے قبل سول ایوی ایشن اتھارٹی کو13سال بعد واجبات یاد آگئے

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سول ایوی ایشن اتھارٹی نے پاکستان کی فضائی حدود استعمال کرنے پر امریکہ اور نیٹوافواج سے واجبات مانگ لیے ہیں جبکہ نیٹو و امریکی افواج نے 2001ءسے ایروناٹیکل چارجز کی مد میں ایک پائی بھی ادانہیں کی ۔ ذرائع نے بتایاہے کہ سول ایوی ایشن اتھارٹی کوامریکہ کے افغانستان سے جانے سے قبل لیکن 13سال بعد یاد آگیاکہ افغانستان میں دہشتگردی کے خلاف لڑنے والی امریکی اور نیٹو افواج 2001ءسے پاکستان کی فضائی حدود مفت استعمال کررہی ہیں ۔ ذرائع کاکہناتھاکہ سی اے اے نے ریکارڈ ترتیب دے کر نیٹو افواج کو بیس کروڑ روپے کا بل بھجوادیاہے اور اتھارٹی نے نیٹو حکام کو فوری طورپر واجبات اداکرنے کی ہدایت کی ہے ۔ذرائع کاکہناتھاکہ ماہانہ 350سے400کے قریب نیٹو اور امریکی فوج کے طیارے افغانستان جانے کے لیے پاکستانی حدود استعمال کرتے ہیں اور اُس کے لیے روٹس کا تعین اور دیگر فضائی سہولیات فراہم کی جاتی ہیں ۔مقامی میڈیا کے مطابق افغانستان کے انخلاءکے دوران ممکنہ طورپر ہزار کے قریب نیٹو اور امریکی طیارے فضائی حدود استعمال کریں گے ۔

مزید : بزنس /اہم خبریں