مہنگائی میں اضافہ،آلو ،گوشت اور دودھ سمیت کھانے پینے کی اشیاءکی قیمتیں بڑھ گئیں

مہنگائی میں اضافہ،آلو ،گوشت اور دودھ سمیت کھانے پینے کی اشیاءکی قیمتیں بڑھ ...
مہنگائی میں اضافہ،آلو ،گوشت اور دودھ سمیت کھانے پینے کی اشیاءکی قیمتیں بڑھ گئیں

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) ایک سال میں مہنگائی کی شرح میں ساڑھے آٹھ فیصد اضافے سے آلو ، گوشت اور دودھ سمیت کھانے پینے کی متعدد اشیاءمہنگی ہوئیں جبکہ چند چیزوں کی قیمتو ں میں کمی بھی آئی ہے ۔ وفاقی ادارہ شماریات کے اعدادوشمار کے مطابق جولائی 2013سے مئی 2014تک افراط زر کی اوسط شرح ساڑھے آٹھ فیصد رہی، گزشتہ ایک سال کے دوران آلو کی قیمت 175 فیصد بڑھ گئی ہے ۔ اس دوران دال مونگ میں 35 فیصد، دال مسور 19، زندہ مرغی 20 جبکہ گندم کی منصوعات میں 17 فیصد اضافہ ہوا۔ دودھ کی قیمت میں 14 فیصد، پوسٹل سروسز 23 اور تعلیم 16 فیصد مہنگی ہو گئی۔ بجلی کے بلوں ، ڈاکٹروں کی فیسوں اور گارمنٹس کی قیمتوں میں بھی 16,16 فیصد اضافہ ہوا۔وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق مئی کے مہینے میں ٹماٹر کی قیمت 50فیصد ،پیاز 10 فیصد، گندم 9اور آٹا 6 جبکہ انڈے 8 فیصد سستے ہوئے۔ مسلم لیگ (ن) کی حکومت اپنے پہلے ہی مالی سال کے دوران سوائے صنعتی شعبے کے معاشی ترقی کے تمام اہداف پورے کرنے میں ناکام رہی جبکہ بیرونی تجارت میں اربوں ڈالرز کا خسارہ ہوا ہے ۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں