سعودی اتحاد یمن میں کلسٹر بم استعمال کر رہا ہے ٗ ہیومن رائٹس واچ کا دعویٰ

سعودی اتحاد یمن میں کلسٹر بم استعمال کر رہا ہے ٗ ہیومن رائٹس واچ کا دعویٰ

  

 نیویارک (این این آئی)حقوقِ انسانی کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے یمن میں جاری جنگ میں سعودی عرب اور اس کی اتحادی فوجوں پر کلسٹر بموں کے استعمال کا الزام عائد کیا ہے۔ ہیومن رائٹس واچ کی جانب سے جاری ہونے والے تحریری بیان میں بتایا گیا ہے کہ حوثی باغیوں کے علاقوں میں ممنوعہ کلسٹر بموں کی وجہ سے بچے اور شہری زخمی ہوئے ہیں۔ادارے کے مطابق ان کی ٹیم نے صدا کا دورہ کیا جہاں 15 اور 16 مئی کو بمباری ہوئی تھی۔ہیومن رائٹس واچ کے تحریری بیان میں ادارے سے منسلک سینیئر محقق اولے سولوانگ نے کہا ہے کہ سعودی اتحاد اور لڑنے والے دیگر گروہوں کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ یہ ممنوعہ کلسٹر بم شہریوں کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ یہ ہتھیار عام شہریوں اور فوجی اہداف میں تمیز کی صلاحیت نہیں رکھتے اور کلسٹر بموں سے نکلنے والے چھوٹے بموں سے جنگ ختم ہونے کے بعد بھی عام شہریوں خصوصاً بچوں کو شدید خطرات لاحق ہوتے ہیں‘ہیومن رائٹس واچ کے مطابق حوثی باغیوں کے مضبوط گڑھ صدا صوبے کا دورہ کرنے والے تنظیم کے اہلکاروں کو ایسے شواہد ملے ہیں جن سے واضع ہوتا ہے کہ ممنوعہ کلسٹر بموں سے بچوں سمیت عام شہری زخمی ہوئے ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -