کسان راج تحریک کے زیر اہتمام کاشتکاروں کا پریس کلب کے باہر مظاہرہ

کسان راج تحریک کے زیر اہتمام کاشتکاروں کا پریس کلب کے باہر مظاہرہ

  

لاہور(کامرس رپورٹر)’’کسان راج‘‘ تحریک کے چیف کوآرڈینیٹر ارسلان خان خاکوانی کی قیادت میں پریس کلب کے باہر کاشتکاروں کا احتجاجی مظاہرہ ، کاشتکاروں نے پلے لکارڈ اٹھا کرحکومت سے مطالبات پر ’’ ساڈا حق ایتھے رکھ‘‘ کے نعرے بھی لگا ئے ’’کسان راج‘‘ تحریک کے چیف کوآرڈینیٹر ارسلان خان خاکوانی، لاہور کے صدر میاں رشید منہالہ، مرکزی نائب صدر چوہدری منظور حسین گجر، سرفراز خاں،چوہدری عمر حیات باجوہ، چوہدری اکرم سندھو اور دیگر عہدیداران نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی معیشت میں زراعت کی حیثیت ریڑھ کی ہڈی کی ہے لیکن تاجر حکومت کی بدولت کسانوں کا کوئی پرسان حال نہیں مجموعی قومی پیداوار میں زراعت کا بائیس فیصد ہے 72 فیصد آبادی کا انحصار بالواسطہ یا بلاواسطہ زرعت کے ساتھ منسلک ہے اٹھارہ کروڑ آبادی کی خوراک کی ضروریات زراعت کے سیکٹر سے ہی پوری ہو رہی ہیں قیام پاکستان سے لے کر اب تک کسانوں کی معاشی، معاشرتی اور سیاسی بہبود کے لیے کوئی قابل ذکر پیش رفت نہیں ہو سکی کسانوں کی اکثریت دیہاتوں میں رہائش پذیر ہے جہاں پر ذرائع رسل و رسائل، صحت و تعلیم کی سہولیات سے بھی محروم ہیں حال ہی میں گندم، چاول، کپاس اور آلو وغیرہ کی قیمتوں میں مسلسل کمی کی وجہ سے کاشتکار شدید بحرانوں کا شکار ہیں اس لیے کسان راج تحریک کا مطالبہ ہے کہ حکمران کھاد، بیج، ادویات اور دیگر زرعی مداخل پر سیلز ٹیکس کا خاتمہ کرتے ہوئے سبسڈی دی جائے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -