ٹیسٹ کے بجائے فرنچائز لیگ بحال کرنے کی تجویز

 ٹیسٹ کے بجائے فرنچائز لیگ بحال کرنے کی تجویز

  

کراچی (یواین پی)سابق قومی لیگ اسپنر دانش کنیریا نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث اس وقت کرکٹ سرگرمیاں معطل ہیں تاہم یہ سلسلہ بحال ہونا چاہئے اورابتدائی مرحلے میں ٹیسٹ کرکٹ کے بجائے فرنچائز اور لیگز زیادہ بہتر رہیں گی کیونکہ ٹیسٹ میچ پانچ روز ہ ہوتا ہے جبکہ ایک دن میں دو ٹی ٹوئنٹی بھی کرائے جا سکتے ہیں۔ مقابلوں کے انعقاد میں کھلاڑیوں، آفیشلز، کمنٹیٹرز کی صحت، براڈکاسٹنگ اور ریونیو کے معاملات کو بھی مد نظر رکھنا ہوگا۔ نسیم شاہ باصلاحیت بالر ہیں جبکہ شاہین شاہ آفریدی ہر کنڈیشن میں ٹیسٹ کرکٹ سمیت تینوں فارمیٹس میں خود کو ثابت کر چکے ہیں۔

  ان کا قد بھی بالنگ میں انہیں کافی مدد فراہم کرتا ہے لہٰذا اُن کا مستقبل تابناک ہے۔دانش کنیریا کے مطابق محمد حسنین نے ٹی ٹوئنٹی میں ملک کی نمائندگی کی تاہم ان کی کارکردگی میں تسلسل نہیں۔ محمد حسنین اور نسیم شاہ کو مسلسل انجریز کا بھی سامنا ہے جو کہ اچھی بات نہیں لہٰذا کیریئر کو طوالت دینے کیلئے انہیں اس جانب دھیان دینا ہوگا۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ بابر اعظم، اظہر علی اور شان مسعود اچھے کھیل کا مظاہرہ کررہے ہیں تاہم اگر کسی ایک کھلاڑی کی بات کی جائے تو بابر اعظم سب سے نمایاں ہیں جنہوں نے گراؤنڈ میں اپنی کارکردگی سے خود کو ثابت کیا۔ اسد شفیق 60سے زائد ٹیسٹ کھیل چکے تاہم ان کے اعداد و شمار ظاہر کرتے ہیں کہ وہ زیادہ متاثر نہیں کر سکے۔ 

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -