جنوبی ایشیاء میں دیر پاامن کا قیام طویل تنازعات کو حل کرنے سے ممکن ہے: جنرل باجوہ

    جنوبی ایشیاء میں دیر پاامن کا قیام طویل تنازعات کو حل کرنے سے ممکن ہے: ...

  

راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک،آن لائن) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ جنوبی ایشیا میں دیرپا امن کا قیام طویل تنازعات کو حل کرنے سے ممکن ہے، علاقائی امور طے کرنے کیلئے عالمی حمایت اور عزم ضروری ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کمانڈ اینڈ اسٹاف کالج کوئٹہ میں افسروں اور فیکلٹی ارکان سے خطاب کیا اور ملک کو درپیش اندرونی اور بیرونی چیلنجز پربروشنی ڈالی، اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ایک پیشہ ور اور اعلیٰ تربیت یافتہ فوج امن کی ضامن ہے، جنوبی ایشیاء میں امن و استحکام کا دار و مدار دیرینہ تنازعات کے حل میں ہے، جس کیلئے عالمی حمایت اور تعاون سے ان تنازعات کو حل کیا جا سکتا ہے، آرمی چیف جنرل قمر جا و ید باجوہ کا کہنا تھا کہ پختہ عزم سے علاقائی مسائل اور چیلنجز سے نمٹنے میں مدد مل سکتی ہے، آرمی چیف نے زور دیا کہ افسران پیشہ ورانہ مہارت کے حصول کیلئے بھرپور کوششیں کریں، نئے چیلنجز پر قابو پانے کیلئے پیشہ ورانہ مہارت خصوصی اہمیت کی حامل ہے، پاک فوج کے سپہ سالار نے کورونا وباء پر قابو پانے کے حوالے سے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاک فوج قوم کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے کیلئے ریاستی اداروں کیساتھ تعاون جاری رکھے گی، متفقہ اور جامع قومی کوشش سے ترقی اور استحکام ممکن ہے، قبل ازیں آرمی چیف جب کوئٹہ پہنچے تو کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل محمد وسیم اشرف نے ان کا استقبال کیا، کمانڈنٹ کمانڈ اینڈ سٹاف کالج کوئٹہ لیفٹیننٹ جنرل ندیم انجم بھی موجود تھے۔

جنرل باجوہ

مزید :

صفحہ اول -