پنجاب کا 3لاکھ 65ہزار ایکڑ رقبہ ٹڈی دل کے زیر قبضہ، سپرے کا عمل جاری

  پنجاب کا 3لاکھ 65ہزار ایکڑ رقبہ ٹڈی دل کے زیر قبضہ، سپرے کا عمل جاری

  

لاہور(جنرل رپورٹر) پنجاب کا تین لاکھ پینسٹھ ہزار ایکڑ رقبہ ٹڈی دل کے حملوں کی زد میں آگیا۔ محکمہ زراعت کے مطابق دیگر فصلوں کی نسبت کپاس کی فصل کو زیادہ نقصان پہنچ رہا ہے۔تفصیل کے مطابق ٹڈی دل کے لشکر ملک بھر کے 61 اضلاع میں تباہی مچا رہے ہیں جن میں جھنگ، لیہ، بہاولپور، بھکر اور راجن پور سمیت پنجاب کے بھی 12 اضلاع شامل ہیں جہاں کاشتکار شدید مشکلات کا شکار ہیں۔اگرچہ حکام کا دعویٰ ہے کہ حکومت صورت حال سے پوری طرح آگاہ ہے۔ دوسری طرف اقوم متحدہ کے ادارے فوڈ اینڈ ایگریکلچر آرگنائزیشن کی طرف سے وارننگ جاری کردی گئی ہے کہ 20 جون سے 20 جولائی کے دوران پاکستان میں ٹڈی دل کے مزید لشکر آسکتے ہیں یہ تمام تر صورت حال دیگر فصلوں کی نسبت کپاس کی فصل کے لیے بہت خطرناک ثابت ہو رہی ہے۔مزید بر آں صورت حال کی سنگینی کے پیش نظر ٹڈی دل کے خاتمے کے لیے ایمرجنسی کا نفاذ بھی عمل میں لایا جا چکا ہے۔

اسلام آباد (این این آئی)این ڈی ایم اے کی جانب سے ملک بھر میں ٹڈی دل کے خلاف آپریشن کی تفصیلات پیش کر دی گئیں جس کے مطابق اس وقت ملک کے 52 اضلاع میں ٹڈی دل موجود ہے۔پیر کو ترجمان نے بتایاکہ ٹڈی دل کے حملہ زدہ علاقوں کا سروے اور کنٹرول آپریشن جاری ہے۔ ترجمان کے مطابق کل 1128 ٹیموں نے لوکسٹ کنڑول آپریشن میں حصہ لیا۔ ترجمان کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں 3لاکھ 50 ہزار ہیکٹر رقبہ کا سروے ہوا۔ ترجمان کے مطابق 4900 ہیکٹر رقبہ کا ٹڈی مار ادویات سے ٹریٹمنٹ کیا گیا۔ بلوچستان میں 3200 ہیکٹر رقبہ پر اسپرے کیا گیا۔ترجمان کے مطابق پنجاب میں 100 ہیکٹررقبے پر سپرے کیا گیا۔ ترجمان این ڈی ایم اے کے مطابق خیبر پختونخواہ میں 1000ہیکٹر رقبہ کی ٹریٹمنٹ ہوئی۔ ترجمان کے مطابق سندھ میں گزشتہ روز 600 ہیکٹر رقبہ ٹریٹمنٹ کیا گیا۔ ترجمان کے مطابق اب تک پورے ملک میں 4لاکھ 97 ہزار ہیکٹر رقبہ پر سپرے کیا جا چکا ہے۔

این ڈی ایم اے

مزید :

صفحہ آخر -