گونگے بہرے قیدیوں کے حقوق کی درخواست پرسماعت آئندہ پیشی تک ملتوی

 گونگے بہرے قیدیوں کے حقوق کی درخواست پرسماعت آئندہ پیشی تک ملتوی

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ کے مسٹرجسٹس علی باقرنجفی نے جیلوں میں قید اندھے اور گونگے بہرے قیدیوں کے حقوق کیلئے دائر درخواست پردرخواست گزار وکیل سے مزید دلائل طلب کرتے ہوئے سماعت آئندہ پیشی تک ملتوی کردی،عدالت نے قراردیا کہ یہ انتہاء اہم نوعیت کا معاملہ ہے، اس پر قانون کے مطابق عمل درآمد ہونا چاہیے۔درخواست گزار کا موقف ہے کہ پنجاب کی مختلف جیلوں میں قید سزا یافتہ اور غیر سزا یافتہ گونگے بہرے اور اندھے قیدیوں کے حقوق متاثر ہورہے ہیں،ایسے قیدیوں کو مقدمات میں صحت، ذہنی اور جسمانی مسائل کے متعلق آگاہی کے لئے مشکلات درپیش ہیں،جیلوں کی انتظامیہ ان کی بات کو نہ تو سمجھ پاتی ہے اور نہ ہی انہیں بنیادی انسانی حقوق فراہم کرپاتی ہے،پنجاب کی مختلف جیلوں میں 13 گونگے  بہرے نڈرٹرائل اور 9 سزا یافتہ مجرم قید ہیں،جیلوں میں 4 انڈر ٹرائل اور 6 سزا یافتہ اندھے مجرم قید کاٹ رہے ہیں،یہ تمام قیدی جیلوں میں جانوروں کی طرح زندگی گزار رہے ہیں کوئی ان کی زبان سمجھتا ہے نہ ہی ان کی ترجمانی کرسکتا ہے،عدالت سے استدعا ہے کہ صوبہ کی تمام جیلوں میں اندھے اور گونگے بہرے قیدیوں کی ترجمانی کے لئے ایکسپرٹ بھرتی کرنے کا حکم جاری کیاجائے۔

 گونگے بہرے قیدیوں 

مزید :

صفحہ آخر -