کمیونٹی سکولز اساتذہ کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

    کمیونٹی سکولز اساتذہ کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

  

پشاور(سٹی رپورٹر)خیبرپختونخوا ایلمنٹری اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن کے ماتحت چلنے والے صوبہ بھر کے کمیونٹی سکولز کے اساتذہ نے مستقلی کیلئے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا جسمیں کثیر تعداد میں صوبہ بھر کے کمیونٹی سکولز کے اساتذہ نے شرکت کی مظاہرے کی قیادت ضاء الرحمن سمیت دیگر اساتذہ نے کی جسمیں خواتین بھی تھی۔مظاہرین نے ہاتھو ں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے جن پر انکے حق میں مطالبات درج تھے اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ صوبہ بھر میں  صوبے میں کمیونٹی سکولز کی تعداد 2270 ہیں جن میں 2972 اساتذہ اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ ان سکولوں میں مجموعی طور پر 136650 طلباء جن میں 86000  طالبات بھی شامل ہیں تعلیم حاصل کررہے ہیں۔  انہوں نے کہا کہ کمیونٹی سکولز میں اٹھ سالوں سے کنٹریکٹ پر کام رہے ہیں  جسمیں اکثر اساتذہ ماسٹر ڈگری ہولڈر ہے اور ایم فیل ساتذہ کی بھی بڑی  تعداد  شامل ہے  جبکہ 2014سے تھوڑی سی فکس تنخواہ پر فرائض انجام دے رہے ہیں اسکے علاوہ سکولوں کا کرایہ،بجلی بلز،سٹیشنری کا سامان بھی اساتذہ اپنی جیب سے ادائیگی کرتے ہیں  انہوں نے کہا کہ ان سکولوں کی کارکردگی سب کے سامنے ہیں اور صوبائی حکومت، محکمہ تعلیم اور دیگر سرکاری و نیم سرکاری ادارے ان کمیونٹی سکولز کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کمیونٹی سکولز میں عرصہ دراز کام فرائض انجام دینے کے باوجود  ہمیں مستقل نہیں کیا گیا جبکہ زیادہ تر اساتذہ اوور ایج ہوچکے ہیں اور کسی دوسری محکمہ میں نوکری کے اہل بھی نہیں ہے۔ انہوں نے پی ٹی ائی چئیرمین عمران خان،وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا،وزیر تعلیم شہرام ترکئی اور دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ائنڈہ بجٹ میں صوبائی حکومت ہماررے لئے خصوصی سکیم شامل کریں تاکہ ہم مستقل طور پر پرائمری سکول ٹیچرز بھرتی ہو جائیں 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -