روئی کے بھاﺅ میں مجموعی طور پر مندی کا رجحان غالب رہا

روئی کے بھاﺅ میں مجموعی طور پر مندی کا رجحان غالب رہا

کراچی (آن لائن) مقامی کاٹن مارکیٹ میں گزشتہ ہفتہ کے دوران ٹیکسٹائل واسپنگ ملز کی جانب سے روئی کی خریداری میں عدم دلچسپی کے باعث روئی کے بھاﺅ میں مجموعی طور پر مندی کا رجحان رہا دوسری جانب بھارت سے کم قےمت کاٹن ےارن کی درآمد کے باعث پاکستان کی اسپنگ ملوں کے مستقبل کو شدےد خدشات لاحق ہوگئے ہےں ۔ کراچی کاٹن ایسوسی ایشن کی اسپاٹ ریٹ کمیٹی نے اسپاٹ ریٹ 50 روپے کی ردوبدل کے بعد فی من 6850 روپے کے بھاﺅ پر رکھا۔ صوبہ سندھ میں روئی کی فی من قےمت5600 تا 7000 روپے رہی، پھٹی جو انتہائی قلیل مقدار میں دستیاب ہے کی قیمت فی 40 کلو 2300 تا 2800 روپے جبکہ صوبہ پنجاب میں روئی کا بھاﺅ فی من 6700 تا 7000 روپے رہا پھٹی کا بھاﺅ 2300 تا 3000 روپے رہا۔ کراچی کاٹن بروکرز فورم کے چیئرمین نسیم عثمان نے بتاےاکہ کاٹن سیزن کا اختتام ہورہا ہے، پھٹی کی رسد نہ ہونے کے برابر ہے، کپاس کی کل پیداوار تقریباً ایک کروڑ 35 لاکھ گانٹھوں کے لگ بھگ ہونے کی توقع ہے ،فی الحال جینرز کے پاس کپاس کی تقریباً 10 لاکھ گانٹھوں کا اسٹاک موجود ہے جبکہ نئی فصل کی آمد میں ابھی 4 تا 5 مہینے درکار ہیں اس حساب سے کپاس کے بھاﺅ مستحکم رہنے کی امےد کی جا رہی ہے لیکن سرحد کی دوسری جانب سے بھارت سے کاٹن یارن کی کم قیمت پر درآمد کے باعث ملک مےں کاٹن یارن کے بھاﺅ میں گراوٹ آئی ہے۔ بھارتی حکومت کاٹن یارن کی برآمد کی حوصلہ افزائی کے لئے اسپنگ ملوں کو کاٹن یارن کی ریبیٹ REBATE دے رہی ہے۔

 اور ڈیوٹی میں بھی کمی کررہی ہے جس کے باعث بھارت کا کاٹن یارن پاکستان میں ڈمپٹ (Dumpt )ہورہا ہے جو پاکستان کی اسپنگ ملوں کیلئے نقصان کا باعث ہے۔ پاکستان کے کئی ملز مالکان بھارت سے درآمد شدہ کاٹن یارن پر اینٹی ڈپنگ ڈیوٹی عائد کرنے کا مطالبہ کررہے ہیں تاکہ مقامی اسپنگ ملز کو سہارا مل سکے۔ دریں اثناءوفاقی کاٹن کمیٹی نے اسلام آباد میں ہونے والے اجلاس میں آئندہ سیزن 2014-15 کے لئے ملک میں کپاس کی پیداوار کا ہدف ایک کروڑ 51 لاکھ گانٹھےں (وزن 170 کلو) مقرر کی ہےں جو گزشتہ سال کے ہدف ایک کروڑ 41 لاکھ گانٹھوں سے 10 لاکھ گانٹھیں زےادہ ہے جبکہ نظرثانی شدہ آخری ہدف ایک کروڑ 23 لاکھ 30ہزار گانٹھوں کی نسبت 26لاکھ70ہزار گانٹھےں زےادہ ہے،دوسری جانب ہفتہ کے دوران مقامی ےارن مارکےٹ مےں مندی کا رجحان دےکھا گےا اور نےوےاک کاٹن کے بھاﺅ مےں بھی مندی رہی ۔#

مزید : کامرس