پاکستانی فوج کی مضبوطی دیکھ کر دہشتگرد بوکھلا گئے ہیں، عسکری ماہرین

پاکستانی فوج کی مضبوطی دیکھ کر دہشتگرد بوکھلا گئے ہیں، عسکری ماہرین

لاہور(انوسٹی گیشن سیل) جنگ بندی مثبت پیش رفت ہے ،طالبان پر لٹکی تلوار ہٹانے سے حکومت دھوکہ کھا سکتی ہے۔پاکستانی فوج کی مضبوطی دیکھ کر دہشتگرد بوکھلا گئے ہیں ،حکومت تعین کرے کہ جنگ بندی کا اعلان کرنے والے طالبان کا تمام گروپوں پر کنٹرول ہے یا سکی ایک علاقے میں جنگ بندی کا اعلان کیا گیا ہے۔ان خیالات کا اظہا ر ملک کے عسکری ماہرین نے روز نامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ہے۔آئی جی (ر)الطاف قمر نے کہاکہ جنگ بندی کا اعلان کرکے طالبان نے مثبت قدم اٹھایا ہے۔بظاہر لگتا ہے کہ آرمی ایکشن کا خاطر خواہ اثر ہو ا ہے جس سے طالبان نے گھبرا کر جنگ بندی کا اعلان کیا ہے۔پاکستان کے پاس مضبوط فوج ہے جس کے سامنے طالبان کھڑے نہیں ہو سکتے۔حکومت کو طالبان کی چال سمجھتے ہوئے موقع سے فائدہ اٹھانا چاہیے۔فوج اور حکومت کو ذمہ داریاں احسن طریقے سے نبھانی چاہیں۔سول حکومت مذاکرات کرے لیکن طالبان سے لٹکی تلوار نہیں ہٹانی چاہیے۔جنرل(ر)راحت لطیف نے کہاکہ حکومت کو تعین کرنا چاہیے کہ جنگ بندی کا اعلان کرنے والے طالبا ن کا کنٹرول پورے علاقے پر ہے یا محض مخصوص علاقے پر۔اگر ڈائیلاگ درست سمت چل نکلے تومکمل بہتری کےلئے ایک ماہ کی بجائے دو ماہ بھی لگ سکتے ہیں۔ائیر مارشل (ر)شاہد ذوالفقار نے کہاکہ طالبان سے مذاکرات کی کامیابی کی توقعات بہت کم ہیں۔حکومت کو دیکھنا ہو گا کہ کہیں طالبان جنگ بندی کی آڑ میں اپنے آپ کو مضبوط کرنے کےلئے مہلت تو نہیں لینے چاہتے۔

مزید : صفحہ آخر