’میرا ہمسفر ٹریفک حادثے میں مارا گیا، پھر میں اس ڈرائیور سے ملنے گئی جس نے اسے مارا تھا تاکہ اس سے پوچھ سکوں کہ اس وقت۔۔۔‘ نوجوان لڑکی نے ایسی بات کہہ دی کہ سن کر بہت سے پاکستانی بے حد شرمندہ ہوجائیں گے

’میرا ہمسفر ٹریفک حادثے میں مارا گیا، پھر میں اس ڈرائیور سے ملنے گئی جس نے ...
’میرا ہمسفر ٹریفک حادثے میں مارا گیا، پھر میں اس ڈرائیور سے ملنے گئی جس نے اسے مارا تھا تاکہ اس سے پوچھ سکوں کہ اس وقت۔۔۔‘ نوجوان لڑکی نے ایسی بات کہہ دی کہ سن کر بہت سے پاکستانی بے حد شرمندہ ہوجائیں گے

لندن (نیوز ڈیسک) اس دنیا میں انسانی جان سے زیادہ قیمتی کوئی جان نہیں، لیکن حیرت کی بات ہے کہ موٹرسائیکل یا گاڑی چلاتے ہوئے جب ہم موبائل فون استعمال کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو یہ کیوں بھول جاتے ہیں کہ ہم صرف اپنی ہی نہیں بلکہ دوسروں کی جان کو بھی خطرے میں ڈال رہے ہیں۔ اس بھول کی ہمیں، اور دوسروں کو، کیا قیمت چکانی پڑسکتی ہے، اس کا اندازہ ایک برطانوی نوجوان کی عبرتناک مثال سے بخوبی کیا جاسکتا ہے۔

دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 24 سالہ لوئس سٹریٹفرڈبیک شائر کے علاقے میں A34 موٹروے پر محو سفر تھا۔ وہ گاڑی چلاتے ہوئے اپنی شریک حیات کے ساتھ موبائل فون پر لڑائی کررہا تھا، جس کی وجہ سے ڈرائیونگ پر پوری طرح دھیان نہیں دے پارہا تھا۔ پھر اچانک اس کی گاڑی بے قابو ہوئی اور سڑک کے درمیان لگی رکاوٹوں کو توڑتی ہوئی دوسری جانب ایک گاڑی سے جاٹکرائی، جس میں سوار 28 سالہ انجینئر گیون رابرٹس جان کی بازی ہارگیا۔

’میں آئینی امور کی ماہر ہوں لیکن اب وکالت چھوڑ کر جسم فروشی کا پیشہ اپنالیا ہے کیونکہ۔۔۔‘ خاتون وکیل نے ایسی بات کہہ دی کہ جان کر تمام وکیلوں کے گال شرم سے لال ہوجائیں

گیون اپنی نائٹ شفٹ ڈیوٹی کے لئے دفتر جارہا تھا، مگر لوئس کی ایک غلطی اس کے لئے موت کا پیغام بن گئی۔ اس کی 27 سالہ شریک حیات میگ ولیم سن، جو کہ ایک سکول میں انگریزی زبان کی ٹیچر ہے، نے اپنے ہمسفر کی موت کا سبب بننے والے لوئس سے ملاقات کا فیصلہ کیا۔ لوئس کا کہنا تھا ”جب مجھے پیغام ملا کہ میگ مجھ سے ملنا چاہتی ہیں تومیں شدید پریشان ہو گیا۔ میں قصوروار ہوں اور خود کو بہت برا محسوس کرتا ہوں۔ مجھے یوں محسوس ہوتا ہے کہ ہر جگہ ہر کوئی مجھ سے نفرت کرتا ہے اور میرا خیال تھا کہ وہ بھی مجھ سے نفرت کرے گی۔ میں اس بات پر بھی حیران تھا کہ وہ ایک قاتل پر نظر بھی کیوں ڈالنا چاہے گی۔“

پھر ایک روز میگ اپنے شریک حیات کے قاتل سے ملنے آئی۔ وہ لوئس سے پوچھنے لگی ”جب اس روز اندوہناک حادثہ ہواتوایسی کیا اہم بات تھی جو تم موبائل فون پر کررہے تھے؟ “ لوئس نے جواب دیا ”میری اپنی شریک حیات کے ساتھ تلخی ہوئی تھی اور میں اس سے ناراض ہوکر گھر سے نکلا تھا۔ راستے میں بھی موبائل فون پر اس کے ساتھ جھگڑا کررہا تھا۔ جب حادثہ ہوا تو موبائل فون پر اسے بھی تمام آوازیں سنائی دے رہی تھیں۔ مجھے یہ سن کر بہت صدمہ پہنچا ہے کہ گیون اپنی ڈیوٹی پر جانے کے لئے گھر سے نکلا تھا۔ وہ تو صرف اپنے کام پر جارہا تھا، یہ سوچ کر مجھے بے حد دکھ ہوتا ہے۔ میں اپنے زخموں کے بارے میں کیا بتاﺅں، یہ اس کے مقابلے میں کچھ بھی نہیں ہیں جو آپ کے ساتھ ہوچکا ہے۔ میری بائیں ٹانگ ٹوٹی اور کچھ اندونی زخم آئے، میرے پھیپھڑوں کو بھی نقصان پہنچا۔“

اس موقع پر جب لوئس نے میگ سے پوچھا ”کیا آپ مجھ سے نفرت کرتی ہیں؟“ جس کے جواب میں میگ کا کہنا تھا ”شاید۔۔۔ لیکن بہت سے لوگ ایسی غلطیاں کرتے ہیں، اور یہ بہت احمقانہ غلطی تھی۔ میں ہمیشہ کے لئے تم سے نفرت نہیں کرنا چاہتی، میں اس طرح کا مزاج نہیں رکھتی۔ شاید بالآخر میں تمہیں معاف بھی کردوں۔“لوئس نے اپنی سنگین غلطی پر آنسو بہاتے ہوئے کہا ”اب میں کبھی دوران ڈرائیونگ موبائل فون استعمال نہیں کروں گا۔ شاید میں کبھی ڈرائیونگ بھی نہیں کروں گا، کبھی بھی نہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...