اس آدمی نے اپنی بوڑھی ماں کو اس طرح ڈگی میں کیوں بٹھا رکھا ہے؟ وجہ وہ نہیں جو آپ سوچ رہے ہیں بلکہ حقیقت ایسی کہ سوچنا بھی مشکل

اس آدمی نے اپنی بوڑھی ماں کو اس طرح ڈگی میں کیوں بٹھا رکھا ہے؟ وجہ وہ نہیں جو ...

بیجنگ (نیوز ڈیسک) گاڑی کی ڈگی میں انسان تو کیا کسی جانور کو بٹھا کر سفر کرنا بھی محفوظ اور پسندیدہ عمل قرار نہیں دیا جاسکتا، لیکن اس جوان بیٹے کے بارے میں کیا کہا جائے کہ جس نے گاڑی میں گنجائش نہ ہونے پر اپنی بوڑھی ماں کو ڈگی میں بٹھادیا۔

ویب سائٹ shanghaiist کی رپورٹ کے مطابق یہ افسوسناک واقعہ چینی شہر زینگ زو میں پیش آیا جہاں ایک نوجوان نے ایک تقریب سے واپسی پر گاڑی میں دیگر افراد کے موجود ہونے کی وجہ سے اپنی ماں کو پیچھے ڈگی میں بٹھا دیا۔ یہ بدبخت بیٹا اسی حالت میں شہر کی سڑکوں پر گاڑی دوڑاتے ہوئے اپنی والدہ کو اس کے گھر چھوڑ کر آیا۔

پولیس نے 99 سالہ اس خاتون کو گرفتار کرکے جیل میں بند کردیا لیکن گرفتار ہونے پر یہ حد سے زیادہ خوش کیوں ہے؟ اصل وجہ جان کر آپ کی بھی ہنسی نہ رکے گی

بوڑھی خاتون کو گاڑی کی ڈگی میں قابل ترس حالت میں بیٹھا دیکھ کر متعدد افراد نے اس کی تصاویر بنا کرسوشل میڈیا پر پوسٹ کردیں۔ انٹرنیٹ پر یہ تصاویر آتے ہی ایک ہنگامہ برپاہوگیا اور معمر خاتون کے ساتھ بدسلولی کرنے والے شخص کو تنقید کا نشانہ بنایا جانے لگا۔ اس وقت تک کسی کے وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ گاڑی کی ڈگی میں بیٹھی معمر خاتون گاڑی چلانے والے نوجوان کی ماں تھی۔ جب انٹرنیٹ اور مقامی میڈیا میں اس خبر نے ہنگامہ برپاکردیا تو بالآخر یہ شخص خود ہی سامنے آگیا۔ اس کا کہنا تھا کہ وہ اپنے بھائی کی منگنی کی تقریب سے فارغ ہونے کے بعد اہلخانہ کے ساتھ گھر لوٹ رہا تھا اور اس موقع پر اس کی بوڑھی والدہ بھی اپنے گھر جانا چاہ رہی تھیں لیکن ان کے پاس کوئی سواری نہ تھی۔ اس شخص کا کہنا ہے کہ گاڑی میں گنجائش کم تھی جس کی وجہ سے اس کی ماں نے خود ہی کہا کہ وہ ڈگی میں بیٹھ جائے گی، اور اس نے یہ بات تسلیم کرلی۔ مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے اس شخص کا کہنا تھا کہ اب وہ سوچتا ہے کہ اسے اپنی ماں کی بات نہیں ماننی چاہیے تھی اور اسے باعزت طریقے سے گھر چھوڑ کر آنا چاہیے تھا۔ اگرچہ اس شخص نے اپنے کئے پر شرمندگی کا اظہار کیا ہے تاہم انٹرنیٹ صارفین کا غصہ ٹھنڈا نہیں ہورہا اور وہ اب بھی اس پر لعن طعن جاری رکھے ہوئے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...