ایران کا حتمی ہدف سعودی دارالحکومت ریاض ہے ،اسرائیلی وزیرخارجہ

ایران کا حتمی ہدف سعودی دارالحکومت ریاض ہے ،اسرائیلی وزیرخارجہ

تل ابیب(این این آئی)اسرائیل کے وزیر خارجہ ایویگڈور لیبرمین نے کہا ہے کہ ایران کا حتمی ہدف سعودی دارالحکومت ریاض ہے اور سنی عرب ریاستوں کے ساتھ مذاکراتی عمل شروع کر کے خطے کے بنیاد پرست عناصر کو شکست دی جا سکتی ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق گزشتہ روز میڈیا سے بات چیت میں انہوں نے تجویز کیا کہ اسرائیل سنی عرب ریاستوں کے ساتھ مل کر مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کی طرز پر ایک عسکری اتحاد بنانا چاہتا ہے۔ لیبرمین کے مطابق مشرق وسطیٰ میں تقسیم یہودی اور مسلمان کی نہیں بلکہ اعتدال پسند اور بنیاد پرست مسلمانوں کے درمیان پیدا ہے۔ اسرائیلی وزیر دفاع ایویگڈور لیبرمین نے کہاکہ وقت آ گیا ہے کہ تمام اعتدال پسند قوتوں کو ملا کر مشرق وسطٰی میں دہشت گردوں کے خلاف ایک اتحاد بنایا جائے۔ ان کے بقول معتدل سنی ریاستوں کو یہ بات سمجھ آ گئی ہے کہ ان کا اصل دشمن اسرائیل نہیں ایران ہے۔ لیبر مین نے مزید کہا کہ یہ اتحاد نیٹو کے اصولوں کو سامنے رکھتے ہوئے ہی بنایا جائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیل ایک مضبوط ملک ہے اور وہ خود اپنا دفاع کر سکتا ہے۔

مزید : عالمی منظر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...