حالات نہیں حکمران خراب ہیں،ریاست کو طاقتور بننا چاہیے،جاوید ہاشمی

حالات نہیں حکمران خراب ہیں،ریاست کو طاقتور بننا چاہیے،جاوید ہاشمی

ملتان (سٹی رپورٹر) پاکستان کو جو موجودہ صورتحال درپیش ہے یہ پاکستان کو توڑنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ دراصل ہمارے حکمران خراب ہیں حالات خراب نہیں ہیں۔ ہم اداروں کو اہمیت نہیں دیتے۔ سیاست میں دھڑے بندی نہیں ہونی چاہیے۔ یہاں فرد کی نہیں انصاف کی حکومت (بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

ہونی چاہیے۔ ہمیں حالات سکھا رہے ہیں کہ ہمیں کونسا راستہ اختیار کرنا ہے۔ ریاست کو طاقتور بننا چاہیے اور عوام کو بولنے والا۔ ان خیالات کا اظہار سینئر سیاست دان مخدوم جاوید ہاشمی نے سویل ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن ، حلقہ خوبصورت ملتان اور حفیظ گھی اینڈ جنرل ملز شمع بناسپتی کے اشتراک سے منعقدہ سیمینار ’’موجودہ ملکی حالات میں ریاست اور ہمارا کردار‘‘ سے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہاں سوچنے والے کو گھر بھیج دیا جاتا ہے۔ اس ملک کو سیاست نے ہی چلانا ہے۔ ہمیں اپنے طرز عمل میں اور آئینی معاملات میں تبدیلی لانا ہوگی۔ مشرقی پاکستان کی علیحدگی بہت بڑا المیہ تھی۔ 1965 کی جنگ میں پاکستانیوں میں ایک جذبہ تھا۔ یہ قوم غلط نہیں ہے کوئی بھی یہاں احتساب نہیں چاہتا۔ صحیح عدالتی نظام ہماری ضرورت ہے اگر کسی کو سزا ہوتی ہے تو ہوجائے ہم اپنے آپ کو اپنے ہی حوالوں سے دیکھنے کے عادی بن رہے ہیں۔ ہم نے انہیں فارغ کردیا جنہوں نے مسلم لیگ بنائی تھی۔ اس وقت معیشت کا رخ مشرق کی جانب ہے۔ چائنہ دینے والا ملک ہے جبکہ امریکہ خود مقروض ہے۔ C-Pak ملکی ترقی میں اہم کردار ادا کریگا مگر ہمیں خلوص نیت سے کام کرنا ہوگا۔ سویل ڈویلپمنٹ جیسی تنظیمیں فکری، ابیاری میں اپنا کردار ادا کررہی ہیں۔ اس موقع پر سابق ممبر صوبائی اسمبلی ملک جہانزیب وارن، ممتاز ماہر قانون پروفیسر حنیف چوہدری، ممتاز معالج ڈاکٹر اکمل مدنی، ممتاز شاعر نصیر ہمایوں، ممتاز ماہر تعلیم مسز نعیم ترین، رانا فراز احمد نون، مہمان خصوصی تھے۔ جبکہ اعظم خان خاکوانی، سلیم بخاری، امیر اللہ شیخ مہمان اعزاز تھے۔ اس موقع پر معززین محفل نے خطاب میں ملکی یکجہتی پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں اپنے گردونواح پر نظر رکھنا ہے۔ ہم میں سے ہر فرد پاکستان ہے اور اس کی حفاظت ہم سب پر واجب ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ، اسرائیل ، بھارت اور افغانستان مل کر اس ملک کی معاشرت، معیشت اور ساکھ کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ بے گناہ انسانوں کو اندیکھی جنگ کی آگ میں جلایا جارہا ہے۔ اس موقع پر میزبانان مجلس عامر شہزاد صدیقی، خلیل الرحمن نور زئی، یاسمین خاکوانی نے کہا کہ پاکستان کے خلاف بہت بڑی سازش تیار کی جارہی ہے ۔ پاکستان کی 2600 میل لمبی سرحد دنیا کی واحد متحرک سرحد ہے جو تین اطراف سے خطرات کی زد میں ہے۔ اس موقع پر خطاب کرنے والوں میں افتخار مغل، طارق قادری، احمد نواز سمرو، مدیحہ بتول، اخترانساء، ضیاء انصاری، نعیم کاظمی شامل تھے۔ جبکہ نظامت کے فرائض میاں عامر محمود نقشبندی نے ادا کیے۔ تلاوت اور نعت کی سعادت جمیل قریشی ایڈووکیٹ، ملک سجاد نے حاصل کی۔ شرکت کرنے والوں میں مخدوم ارشد حسین قریشی، ذوالقرنین حیدر، تاج محمد تاج، آصف اعوان، خواجہ حبیب، پروفیسر حاشم خان، محسن خان، سلیمان انصاری، ملک رمضان اعوان، عرفان خان، عمار الحسن، ملک منصور اعوان، سید عبدالباری جعفری، پروفیسر نصرت خان، محمد بلال، عیسیٰ بھٹہ و دیگر شامل تھے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...