سرائیکی قوم حقوق کیلئے متحد‘ صوبہ کے قیام تک جدوجہد جاری رہیگی‘ ظہور دھریجہ

سرائیکی قوم حقوق کیلئے متحد‘ صوبہ کے قیام تک جدوجہد جاری رہیگی‘ ظہور دھریجہ

ملتان (سٹی رپورٹر)سرائیکستان عوامی اتحاد کے رہنماؤں پروفیسر شوکت مغل ، خواجہ غلام فرید کوریجہ، رانا محمد فراز نون ، عاشق بزدار ، ظہور دھریجہ، مسیح اللہ خان جامپوری ، سید مہدی الحسن شاہ اور ممتاز ڈاہر نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ 2 مارچ 2017 ء کو جھوک اُترا ڈی جی خان میں ہونیوالی (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

سرائیکستان کانفرنس میں بھرپور شرکت کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ پوری سرائیکی قوم اپنے حقوق کیلئے متحد ہو چکی ہے اور ہم اس وقت تک خاموش نہیں رہیں گے جب تک صوبہ سرائیکستان قائم نہیں ہو جاتا ۔ انہوں نے کہا کہ سینیٹر سراج الحق نے پنجاب میں پختونوں کے خلاف ہونیوالے مبینہ مظالم کے خلاف جرگہ بلایا ہے لیکن ان کو سرائیکی یاد نہیں رہے جو کہ دو صدیوں سے پنجاب کے جبر اور مظالم کا شکار ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہم سرائیکیوں پر ہونیوالے مظالم کی بات کریں تو ہم پر لسانیت کا فتویٰ عائد ہوتا ہے لیکن سینیٹر سراج الحق ، مولانا فضل الرحمن اور مولانا سمیع الحق پختونوں کی بات کریں تو ان پر کوئی فتویٰ عائد نہیں ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ دوہرے معیار ختم ہونے چاہئیں ، سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ گزشتہ روز ڈی آئی خان میں ٹارگٹ کلنگ کے ذریعے تین آدمیوں کی شہادت پر پورا سرائیکی وسیب سوگوار ہے ۔ حکومت دہشت گردوں کو فوری گرفتار کرے ۔ انہوں نے کہا کہ مردم شماری پر سرائیکی قوم کے تحفظات دور نہ ہوئے تو نتائج تسلیم نہیں کریں گے ۔ پنجاب میں مردم شماری کے نتائج لاہور اور باقی صوبوں کے نتائج اسلام آباد مرتب ہونے کو تسلیم نہیں کرتے ۔ اسی طرح وسیب کے لوگوں کو اس بات پر بھی اعتراض ہے کہ رینجر ان علاقوں میں آپریشن کرے گی جس کی اجازت پنجاب کے حکمران دیں گے ۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ پورے پنجاب میں بلا امتیاز آپریشن کیا جائے ۔ اگر صرف سرائیکی وسیب کو نشانہ بنایا گیا تو ہم احتجاج کریں گے ۔ سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ 6 مارچ اجرک ڈے کے موقع پر ہر گاؤں ، ہر قصبہ اور ہر شہر میں امن ریلیاں ہونگی ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر