حساس اداروں کا پنجاب میں 9 سے زائد تنظیموں کے خلاف آپریشن کا فیصلہ

حساس اداروں کا پنجاب میں 9 سے زائد تنظیموں کے خلاف آپریشن کا فیصلہ

لاہور ( ما نیٹر نگ ڈیسک ) پرویز مشروف کے دور میں کالعدم قرار دی جانے والی کئی تنظیمیں آج بھی نام بدل کر کام کر رہی ہیں۔ پنجاب میں 9 سے زائد تنظیموں کے خلاف حساس اداروں نے آپریشن کا فیصلہ کرلیا۔حساس اداروں اور وزارت داخلہ کی رپورٹ کے مطابق پنجاب میں اس وقت بھی تقریبا 9 سے زائد کالعدم تنظیمیں نام بدل کر سرگرم ہیں۔ یہ تنظیمیں کالعدم تحریک طالبان اور داعش کو پنجاب میں پنپنے کا موقع بھی فراہم کررہی ہیں۔سپاہ صحابہ جسے کالعدم قرار دیا گیا وہ اپنے نئے نام اہلسنت و الجماعت کے نام سے اپنا وجود برقرار رکھے ہوئے ہیں۔ تحریک نفاذ فقہ جعفریہ نے اپنا وجود اسلامی تحریک پاکستان اور جیش محمد، خادم السلام کے نام سے کام کررہی ہے، لشکر جھنگوی نے اپنا نام تو تبدیل نہیں کیا البتہ وہ کالعدم ٹی ٹی پی کے مختلف گروپس اور داعش کے ساتھ الحاق کے ذریعے اپنی کاروائیاں برقرار رکھے ہوئے ہے۔کالعدم سپاہ محمد ملت اسلامیہ کے نام سے کام کررہی ہے۔ جماعتہ الدعوتہ اگرچہ لشکر طیبہ سے اپنا وجود نہیں جوڑتی لیکن بعض حلقے جماعتہ الدعوتہ کو اسی چہرے کا دوسرا رخ قرار دیتے ہیں۔ حزب التحریر کا سیٹ اپ بین الاقوامی سطح کے ساتھ ساتھ پورے پاکستان میں ہے لیکن حالیہ برسوں میں انکے خلاف کاروائی کے باوجود حزب التحریر پنجاب میں اپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں۔

مزید : صفحہ آخر