ای سی او اجلاس اختتام پذیر، پا کستا ن کی دشمن طاقتوں کو مایوسی کا سامنا کرنا پڑا

ای سی او اجلاس اختتام پذیر، پا کستا ن کی دشمن طاقتوں کو مایوسی کا سامنا کرنا ...

اسلام آباد (تجزیہ ،عرفان طارق )حالیہ دہشت گردی کے واقعات ،پاک بھارت افغان بارڈر کشیدگی کے باوجودپاکستانی قوم کے بلند حوصلے اور حکومتی حکمت عملی کے نتیجے میں دشمن کو سخت ناکامی کے ساتھ ساتھ تیرہویں اقتصادی رابطہ تنظیم (ای سی او ) کا اسلام آباد میں ہونے والا اجلاس اختتام پذیر ہو گیا ہے ،لیکن اس کانفرنس میں جہاں ٹیلی کمیونیکشن ، تجارتی ،معاشی اور سیاحتی شعبوں میں وسعت پیدا کرنے کیلئے اتفاق کیا گیا وہاں پاک چائنہ راہداری منصوبے کو انتہائی پذیرائی حاصل ہونے کے ساتھ ساتھ ممبر ممالک نے اس میں کافی دلچسپی کا مظاہرہ کیا ،اور اس کی جانچ کاری میں اپنا زیادہ وقت صرف کیا ،اور اسے خطے کی ترقی کا اہم ترین ستون قرار دیا ،اس کانفرنس میں دس ممبر ای سی او ممالک نے شرکت کی ،جن میں ترکی ایران ،سمیت وسطی ایشائی ریاستوں کے سربراہاں اور وزائے اعظم نے شرکت کی ،کانفرنس کا اختتام ہوا تو ساتھ ہی پاکستان کے روایتی دشمن بھارت سمیت تمام دشمن طاقتوں کا سخت مایوسی کا سامنا کرنا پڑا ،اور افغان حکمرانو ں کو بھی اس کانفرنس کی اہمیت اور افادیت کا اندازہ ہو گیا ،اب بھی افغانستان کے حکمران ہوش کے ناخن نہ لیں تو بھارتی اقاوں کے مشوروں کے بجائے پاکستان کو اپنا حقیقی دوست نہ مانیں تو پھر ان کی اس حقیقیت کو منافقت کہیں یا معصومیت ۔اس کا فیصلہ ان پر چھوڑتے ہیں۔

مزید : صفحہ آخر