رواج ایکٹ کسی صورت قبول نہیں کیا جائیگا‘ قبائلی طلبہ

رواج ایکٹ کسی صورت قبول نہیں کیا جائیگا‘ قبائلی طلبہ

پشاور(کرائمز رپورٹر)قبائل طلبہ محاذ یونیورسٹی کیمپس پشاور نے ر واج ایکٹ کومستردکرتے ہوئے کہاہے کہ یہ ایف سی آر کا دوسرا نام ہے جسے کسی صورت قبول نہیں کیاجائیگاحکومت فاٹا کو خیبر پختونخوا میں فوری طور پر ضم کر ے۔پشاور پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوے مختلف طلبہ تنظیموں اورسول سوساٹی کے نمائندوں نثار باز,بلاول آفریدی اور قیوم شینواری سمیت دیگر نے کہا فاٹا اصلاحات کو کابینہ اجلاس میں شامل کر کے خیبر پختونخوا میں ضم کیا جائے اور این ایف سی ایورڈ میں 6 فیصد حصہ دیا جایے،اُنہوں نے کہاکہ فاٹا اصلاحات کو قومی پالیسی اور پارلیمنٹ کے بحث کا حصہ بنایا جائے اور اآرٹیکل 246اور 247 کو معطل کر کے ایف سی آر سے قبائل کو نجات دلائی جائے کیونکہ اس انتظامی قانون کے زیر سایہ ہم پاکستانی ہونے کا حق کھوبیٹھے ہے، اُن کا کہنا تھا کہ 12 مارچ کو قبائل طلبہ کلاسوں کا بائیکاٹ کر کے دھرنے میں بھر پور شرکت کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...