دبئی اسٹیڈیم میں پہلا میچ کب ہوا اور کن ٹیموں کے مابین ہوا ،متحدہ عرب امارات میں اس سٹیڈیم کی تاریخی اہمیت کیا ہے ؟جانئے وہ باتیں جو آپ کو معلوم ہونی چاہئیں

دبئی اسٹیڈیم میں پہلا میچ کب ہوا اور کن ٹیموں کے مابین ہوا ،متحدہ عرب امارات ...
دبئی اسٹیڈیم میں پہلا میچ کب ہوا اور کن ٹیموں کے مابین ہوا ،متحدہ عرب امارات میں اس سٹیڈیم کی تاریخی اہمیت کیا ہے ؟جانئے وہ باتیں جو آپ کو معلوم ہونی چاہئیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

دبئی (افضل افتخار)دبئی کرکٹ سٹیڈیم کو دبئی سپورٹس سٹی کرکٹ سٹیڈیم کے نام سے بھی جانا جاتا ہے جبکہ اسے ملٹی پرپس سٹیڈیم کا نام بھی دیا جاتا ہے یو اے ای کی سر زمین پر دبئی کرکٹ سٹیڈیم سب سے جدید اور تاریخی کرکٹ سٹیڈیم میں شمارہے۔ یو اے ای میں قائم تین سٹیدیمز میں سے یہ ایک بڑا سٹیڈیم ہے جہاں پر دنیا بھر کی ٹیمیں کھیل چکی ہیں۔ دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں فلڈ لائٹ رنگ آف فائر سسٹم نصب کیا گیا ہے جس سے شائقین دوران میچ لطف اندوز ہوتے ہیں ۔سٹیڈیم میں شائقین کے بیٹھنے کی گنجائش 25 ہزار سے زائد ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ اس گنجائش میں اضافہ کیا جاچکا ہے ۔ دبئی کرکٹ سٹیڈیم کی تعمیر کی بات کی جائے تو اسے 2009 میں جدید بنیادوں پر تعمیر کیا گیا تھا اور اس کے بعد سے یہاں پر ٹیسٹ کرکٹ کے ساتھ ساتھ ون ڈے اور ٹی ٹونٹی میچوں کا آغاز ہوگا ہے یہاں پر کرکٹ کی اہم سیریز بھی منعقد کی جاچکی ہیں۔ دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں پہلا ٹیسٹ میچ پاکستان او ر جنوبی افریقہ کے درمیان 12 سے16 نومبر2010 ءمیں کھیلا گیا جبکہ یہاں پر کھیلا گیا آخری ٹیسٹ میچ جس کی میزبانی اس گراﺅنڈ نے کی وہ میچ 13 اکتوبر سے 17 اکتوبر2016 پاکستان اور ویسٹ انڈیز کی ٹیموں کے درمیان کھیلا گیا ون ڈ ے میچز کا آغاز پاکستان اور آسٹریلیا کی ٹیموں کے درمیان22 اپریل2009 کو کھیلا گیا۔ جبکہ آخری ون ڈے 26 جنوری2017 کو یو اے ای اور ہانک کانگ کی ٹیموں کے مابین ہوا تھا ٹی ٹونٹی میچ کا پہلا میچ 7 مئی2009 کو پاکستان اور آسٹریلیا کی ٹیموں کے درمیان کھیلا گیا جبکہ ٹی ٹونٹی میچ اس سر زمین پر 20 جنوری2017 کو افغانستان اور آئرلینڈ کی ٹیموں کے درمیان ہوا۔ دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلا گیا تاریخ کا پہلا ون ڈے میچ پاکستان کی کرکٹ ٹیم نے 5 وکٹوں سے اپنے نام کیا تھا اور اس گراﺅنڈ کے ساتھ پاکستان کے مایہ ناز آل راﺅنڈر شاہد آفریدی کی بہت حسین یادیں وابستہ ہیں کیونکہ اس میچ میں انہوں نے پانچ وکٹیں حاصل کرکے اس گراﺅنڈمیں پہلا مین آف دی میچ ایوارڈ اپنے نام کیا تھا۔ پاکستان کے سابق کپتان اظہرعلی نے دبئی کرکٹ گراﺅنڈ میں ویسٹ انڈیز کے خلاف حال ہی میں کھیلی جانے والی ٹیسٹ سیریز کے میچ میں302 ناٹ آﺅٹ کی شاندار اننگز کھیلی تھی۔ دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں بنایا جانے والا سب سے زیادہ سکور ون ڈے میں 317 رنز کا ہے جو جنوبی افریقہ کی ٹیم نے پاکستان کے خلا ف پانچ وکٹوں پر بنایا تھا جبکہ یہاں پر سب سے کم رنز سری لنکا کی ٹیم نے پاکستان کے خلاف صرف131 بنائے تھے ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ انفرادی سکور جنوبی افریقہ کے بیٹسمین گریم سمتھ نے 234 بنائے تھے جو پاکستان کے خلاف بنے تھے جبکہ بہترین انفرادی باﺅلنگ کا اعزاز پاکستان کے شاہد خان آفریدی کا ہے جنہوں نے 38 رنز کے عوض چھ وکٹیں اپنے نام کیں اور یہ میچ آسٹریلیا کے خلاف کھیلاگیا تھا۔ دبئی کرکٹ سٹیڈیم میں سب سے زیادہ رنز پورا کرکے کامیابی حاصل کرنے کا اعزاز پاکستان کرکٹ ٹیم کو حاصل ہے جس نے جنوبی افریقہ کے خلاف 275 رنز بناکر یہ میچ ایک وکٹ سے اپنے نام کیا تھا۔ جبکہ پاکستان کی ٹیم کو سری لنکا کے خلاف اس گراﺅنڈ پر شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا جب سری لنکا کی ٹیم نے پاکستان کو 21 رنز سے شکست دیدی تھی۔ دبئی کرکٹ سٹیڈیم آج کل پاکستان سپر لیگ کے میچوں کی میزبانی کررہا ہے جہاں پر شائقین کرکٹ کا جوش و خروش قابل دید ہے ۔

مزید : T20