پاکستان کا وہ ریسٹورنٹ جہاں ویٹرانسان نہیں بلکہ روبوٹ ہیں

پاکستان کا وہ ریسٹورنٹ جہاں ویٹرانسان نہیں بلکہ روبوٹ ہیں
پاکستان کا وہ ریسٹورنٹ جہاں ویٹرانسان نہیں بلکہ روبوٹ ہیں

  

ملتان، حیدرآباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)ٹیکنالوجی کی دنیا میں ترقی سے جہاں کئی آسانیاں پیداہوئیں ، وہیں انسان کا روز گار بھی خطرے میں پڑگیااور کئی جگہوں پر روبوٹ نے انسان کے فرائض سرانجام دیناشروع کردیا ہے ، پاکستان میں بھی ایک ریسٹورنٹ میں بھی انسان ویٹروں کی جگہ روبوٹ نے پلیٹیں سنبھال لی ہیں اور مہمانوں کی خدمت کرتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق یہ ریسٹورنٹ ملتان میں ہے جہاں ایک روبوٹ کو ملازم رکھاگیاجو بطور ویٹراپنے گاہکوں کودیکھ رہاہے ، کھانے سے بھرے ٹرے اٹھا کر متعلقہ میز تک پہنچاتاہے۔صرف یہی نہیں بلکہ اب آپ کو انڈے والا برگر بھی ایک روبوٹ ہی پیش کرے گا، دنیا تبدیل ہوجائے گی ، انسانوں کی جگہ روبوٹ آگئے لیکن انڈے والا برگر وہی کا وہی رہے گا۔ نیوزویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق یہ روبوٹ نسٹ کے گریجوایٹ سیداسامہ نے آٹھ ماہ کی محنت کے بعد چار لاکھ روپے خرچ کرکے ایجاد کیا ۔ سیداسامہ نے بتایاکہ چینی روبوٹس سے متاثر ہوکر یہ روبوٹ بنانے کی ٹھانی اور اب وہ حیدرآباد میں ہی روبوٹ ویٹرز تعینات کرنے کی منصوبہ بندی کررہے ہیں۔

سب سے دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ روبوٹ مکمل طورپر پاکستان میں تیار کیاگیا، ممکن ہے کہ روبوٹ کا ریسٹورنٹس میں خدمات فراہم کرنا ان کا مستقبل نہ ہولیکن یہ آٹومیشن کی ایک جھلک ہے اور یہ ایسی چیزہے جس پر ہمیں فخر کرنا چاہیے ۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی